سی پیک سے صنعتوں کو تحفظات‘ چیمبرز مشترکہ تھینک ٹینک تشکیل دیں

سی پیک سے صنعتوں کو تحفظات‘ چیمبرز مشترکہ تھینک ٹینک تشکیل دیں

فیصل آباد ( بیورورپورٹ) سی پیک کے انڈسٹریلائزیشن کے مرحلہ میں مقامی صنعتوں کے تحفظات اور خدشات دور کرنے کیلئے بالخصوص پنجاب کے تمام چیمبرز کو مشترکہ تھنک ٹینک تشکیل دینا ہو گا۔ جس کے ذریعے نہ صرف پاکستان اور چین کے درمیان صنعتی تعاون کی راہ ہموار کی جا سکے بلکہ مشترکہ منصوبے شروع کرنے کے ساتھ ساتھ ایس ایم ای سیکٹر میں جدید ٹیکنالوجی کے حصول کیلئے قابل عمل حکمت عملی بھی وضع کیا جا سکے ۔ یہ بات فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے نائب صدر انجینئر احمد حسن نے اپنے دورہ سیالکوٹ کے دوران سیالکوٹ چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے صدر ماجد رضا بھٹہ سے ملاقات کے دوران کہی۔ انہوں نے فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کی طرف سے سی پیک کے حوالے سے شائع کی جانیوالی حالیہ سٹڈی رپورٹ بھی سیالکوٹ چیمبر کے صدر کو پیش کی اور بتایا کہ سی پیک سے بھر پور فائدہ اٹھانے کیلئے منظم مربوط اور سنجیدہ کوششوں کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے اس کثیر الملکی انفراسٹرکچر پراجیکٹ کے چوتھے مرحلے پر خاص طور پر تبادلہ خیال کیا جسکے تحت صنعتوں کے قیام پر توجہ دی جائے گی ۔ دونوں چیمبرز کے لیڈروں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ سی پیک سے پیدا ہونے والے مواقعوں سے فائدہ اٹھانے کیلئے پاکستانی سرمایہ کاروں کو چینی صنعتکاروں سے براہ راست رابطے کرنے ہونگے۔

اور اس سلسلہ میں چینی سفارتخانے سے مشترکہ استدعا کی جائے گی کہ وہ پاکستان کی سرمایہ کاروں کو ویزوں کے اجراء کیلئے وہی مراعات اور سہولتیں دے جو انہیں پاکستانی حکومت کی طرف سے دی جارہی ہیں۔ انہوں نے صنعتی تعاون کے سلسلہ میں ایس ایم ای سیکٹر کو ترجیح دینے کا بھی مطالبہ کیا تاکہ ان میں نئی ٹیکنالوجی متعارف کرا کے انکی پیداوار اور کوالٹی کو مزید بہتر بنا یا جا سکے ۔ اس سلسلہ میں ٹیکنالوجی ٹرانسفر کیلئے زیادہ سے زیادہ مراعات دینے کی ضرورت ہے ۔ انجینئر احمد حسن نے سیالکوٹ چیمبر کے صدر ماجد رضا بھٹہ کو اپناائر پورٹ تعمیر کرنے پر بھی مبارکباد دی اور اس ماڈل کو فیصل آباد میں متعارف کرانے کے حوالے سے بعض بنیادی معلومات بھی حاصل کیں ۔ اس موقع پر انجینئر احمد حسن کے ہمراہ فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے ڈائریکٹر ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ ایم ڈی طاہر بھی موجود تھے ۔

مزید : کامرس


loading...