لندن میں سعودی جنرل سے بدسلوکی پر برطانیہ کی معذرت

لندن میں سعودی جنرل سے بدسلوکی پر برطانیہ کی معذرت
لندن میں سعودی جنرل سے بدسلوکی پر برطانیہ کی معذرت

  


لندن/ ریاض(آن لائن) لندن میں سعودی جنرل سے بدسلوکی اور ان پر انڈا پھینکنے کی ناکام کوشش پر برطانوی حکومت نے باضابطہ طور پر سعودی حکومت سے معذرت کر لی ہے ، واضح رہے کہ یمن میں حوثی باغیوں کے خلاف جاری جنگ کی قیادت کرنے والے سعودی عرب کی سربراہی میں بننے والے خلیجی ممالک کے فوجی اتحاد کے سربراہ جنرل احمد عسیری کے ساتھ گزشتہ ہفتے لندن میں یہ نا خوشگوار واقعہ پیش آیا تھا، فرانسیسی میڈیا نے سعودی اخبارات کے حوالے سے بتایا کہ برطانوی حکومت نے جنرل احمد عسیری کے ساتھ ہونے والے اس واقعہ پر باقاعدہ معذرت کرلی، برطانوی وزیر خارجہ بورس جانسن نے سعودی عرب کے وزیر دفاع اور سعودی بادشاہ کے بیٹے محمد بن سلیمان سے رابطہ کر کے اظہار معذرت کیا۔دوسری جانب نشریاتی ادارے مڈل ایسٹ آئی نے ایک وڈیو جاری کی ہے جس میں قیام امن کیلئے قائم ایک تنظیم کے کارکن جنرل احمد عسیری پر حملہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں،اس وڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ سعودی جنرل کے دورے کے دوران کارکنان نعرے بازی کر رہے ہیں، جب کہ ایک کارکن جنرل احمد عسیری کو پکڑنے کی کوشش بھی کررہا ہے ، تاہم سعودی جنرل کارکن کی کوشش کو ناکام بناتے ہوئے کمرے میں داخل ہو جاتے ہیں،سعودی جنرل پر پیچھے سے انڈا اس وقت پھینکا گیا، جب وہ کمرے میں داخل ہو چکے تھے۔

مزید : عالمی منظر


loading...