12ایرانی تربیت یافتہ حوثی باغی یمنی فوج کے ہاتھوں گرفتار

12ایرانی تربیت یافتہ حوثی باغی یمنی فوج کے ہاتھوں گرفتار

میدی (این این آئی)یمن کی سرکاری فوج نے میدی شہر اور اس کے اطراف میں آپریشن کے دوران 12 حوثی باغی جنگجوؤں کو حراست میں لیا ۔ حراست میں لیے گئے شدت پسندوں نے اعتراف کیا ہے کہ انہوں نے ایرانی اور لبنانی عسکری ماہرین کی زیرنگرانی جنگی امور کی تربیت حاصل کر رکھی ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق یمنی فوج کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا کہ فورسز نے میدی شہر اور اس کے اطراف میں حوثی باغیوں کے خلاف ایک بڑا آپریشن شروع کیا تھا جس میں متعدد جنگجو ہلاک اور زخمی ہونے کے ساتھ ساتھ کئی گرفتار کیے گئے ہیں۔گرفتار ایک حوثی جنگجو نے اپنی شناخت فرج محمد شراد کے نام سے کی ہے۔ اس کا کہنا تھا کہ سیکیورٹی فورسز نے میرے ساتھ حسن سلوک کا مظاہرہ کیا ہے اور اسے کسی قسم کی تکلیف نہیں دی گئی۔ گرفتار جنگجو نے اعتراف کیا کہ باغیوں کی صفوں میں ایرانی اور لبنانی عسکری ماہرین موجود ہیں جو باغیوں کو لڑائی کی تربیت فراہم کررہے ہیں۔یمن کی سرکاری فوج نے میدی شہر کے جنوب مغرب سے اندر داخل ہو کر باغیوں کے زیرتسلط سرکاری عمارتوں کو ان سے چھڑا لیا۔ اس سے قبل آئینی فورسز نے میدی شہر کے جنوب مشرقی سمت میں کارروائی کرکے الحوض، تبہ الخنادق، تبی الحرورہ کو باغیون سے چھڑا لیا تھا۔میدی شہر کے چاروں اطراف سے محاصرے کے بعد باغیوں کے کئی اسلحہ ڈپو بھی قبضے میں لے لیے گئے ۔ عرب اتحاد کی مدد سے یمن کی مزاحمتی فورسز نے حجہ گورنری کے میدی شہر کی طرف اہم پیش قدمی شروع کی ہے۔ میدی میں حکومتی فورسز اورحوثی و علی صالح ملیشیا کے درمیان گھمسان کی جنگ جاری ہے۔عسکری ذرائع کے مطابق عرب اتحادی فوج نے بھی میدی میں باغیوں کے ٹھکانوں پر بمباری کرکے باغیوں کی تمام سپلائیں لائنیں کاٹ ڈالی ہیں۔یمنی مزاحمتی ذرائع کے مطابق سیکیورٹی فورسز میدی جنرل اسپتال سے چند میٹر کی دوری پر ہیں۔ اس اسپتال پر اس وقت حوثی باغیوں کا قبضہ ہے۔

مزید : عالمی منظر


loading...