بھارتی تعلیمی اداروں میں کشمیر کی آزادی کے نعرے گونج اٹھے

بھارتی تعلیمی اداروں میں کشمیر کی آزادی کے نعرے گونج اٹھے

کولکتہ(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی ہندو انتہا پسند تنظیم آرایس ایس کے سیمینار کی مخالفت میں کولکتہ کی اکیڈمی آف فائن آرٹس میں کشمیر کی آزادی کے نعرے لگ گئے۔ یہ واقعہ سوشل میڈیا پر اپ لوڈ ایک ویڈیو میں سامنے آیا۔ ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک طالبعلم زور وشور سے کشمیر، ناگالینڈ اور منی پور جیسی مقبوضہ ریاستوں کی آزادی کے حق میں فلک شگاف نعرے بلند کر رہا ہے جبکہ اس کے اردگرد کھڑے دیگر طلبہ نے بینرز اٹھا رکھے ہیں اور وہ بھی اس کا ساتھ دیتے ہوئے نعرے بلند کر رہے ہیں۔ طلبہ نے اُترپردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی کے خلاف بھی بینرز اُٹھا رکھے تھے۔ رپورٹس کے مطابق آر ایس ایس نے بنگلا دیش میں ہندوؤں پر مبینہ حملوں پر بحث کے لئے سمینار کا انعقاد کیا تھا۔واضح رہے کہ اس سے قبل گزشتہ سال فروری 2016ء میں بھی بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کی جواہر لال نہرو یونیورسٹی میں اسی طرح کے نعرے لگائے گئے تھے۔ اس کے بعد پولیس نے ایکشن لیتے ہوئے جے این یو ایس یو کے سابق صدر کنہیا کمار اور دو دیگر طالبعلموں عمر خالد اور انربان کو گرفتار کر لیا تھا۔

نعرے گونج اٹھے

مزید : صفحہ اول


loading...