صوبائی دارالحکومت ، مختلف ٹریفک حادثات میں بینک منیجر کے جواں سال بیٹے سمیت 3افراد جاں بحق

صوبائی دارالحکومت ، مختلف ٹریفک حادثات میں بینک منیجر کے جواں سال بیٹے سمیت ...

لاہور(خبرنگار)صوبائی دارالحکومت میں تین مختلف ٹریفک حادثات کے دوران نجی بینک کے چیف منیجر کے جوان سال بیٹے سمیت 3افرادجاں بحق ہو گئے ہیں۔ واقعات کے خلاف ورثا نے رنگ روڈ اور مغل پورہ چونگی روڈ بلاک کر کے احتجاج کیا اور احتجاج کے دوران ٹرالر کو نذر آتش کر دیا، دونوں علاقوں میں کئی گھنٹے ٹریفک کا نظام متاثر رہا۔ تفصیلات کے مطابق ہربنس پورہ کے علاقہ میں دوبئی اسلامی بینک کے چیف منیجر احسن علی کا جواں سال بیٹا محمد عثمان نماز فجر پڑھ کر مسجد سے نکل کر رنگ روڈ کے ساتھ فٹ پاتھ پر سیر کررہا تھا کہ تیز رفتار ٹرک کے ڈرائیور نے اسے کچل ڈالا اور وہ موقع پر ہی جاں بحق ہو گیا۔ واقعہ کے خلاف ورثا اور اہل علاقہ نے رنگ روڈ کے ساتھ جانے والی سڑک کو بلاک کر کے احتجاج کیا تاہم پولیس نے نعش ضروری کارروائی کے بعد ورثا کے حوالے کر دی ہے۔ اسی طرح شمالی چھاؤنی کے علاقہ صدر چونگی روڈ پر محنت کش محمد اکرم موٹر سائیکل پر گھر جا رہا تھا کہ تیز رفتار 22ویلر ٹرالر نمبرٹی ایل سی 303 کے ڈرائیور نے پیچھے سے ٹکر مار کر بری طرح کچل دیا ، بری طرح کچلے جانے اور سر پر شدید چوٹیں آنے کے باعث وہ موقع پر جاں بحق ہو گیا جبکہ ٹرالر کا ڈرائیور موقع سے فرار ہو گیا۔ واقعہ کے خلاف ورثاء اور اہل علاقہ نے سڑک بلاک کردی اور ٹرالر کو نذر آتش کر کے مسلسل چار گھنٹے تک احتجاج کیا۔ پولیس نے موقع پر پہنچ کر نعش قبضہ میں لے کر ضروری کارروائی کے بعد ورثاکے حوالے کر دی اور مقدمہ درج کر کے ڈرائیور کی گرفتاری کے لئے چھاپے مارنا شروع کر دئے ہیں۔دریں اثناغازی آبادکینال روڈ پر تیز رفتار ٹرالر نے 25سالہ عرفان علی کوکچل دیا جس کے باعث وہ موقع پر دم توڑ گیا۔ پولیس نے مقتول عرفان علی کی نعش ضروری کارروائی کے بعد ورثا کے حوالے کر دی ہے۔

ٹریفک حادثات

مزید : علاقائی


loading...