تھانہ ہر بنس پورہ کو مطلوب درجنوں اشتہار ی دندنانے لگے

تھانہ ہر بنس پورہ کو مطلوب درجنوں اشتہار ی دندنانے لگے

لاہور( خبر نگار) کینٹ ڈویژن میں واقع تھانہ ہربنس پورہ میں درج سنگین مقدمات میں ملوث 68 اشتہاری ابتک پکڑے نہیں جا سکے جبکہ نقب زنوں اور راہزنوں کی وارداتیں رکنے میں نہیں آ رہی ہیں۔ تھانے کی حدود میں پتنگ بازی بھی باقی علاقوں کی نسبت بہت زیادہ ہے۔پولیس نفری کم ہونے کے باعث ایس ایچ او کو معطل کر دیا جاتا ہے۔ ’’پاکستان‘‘ کی ٹیم نے تھانہ کی حدود میں آنے والی آبادیاں قلندر پورہ ، واڑہ ستار، ہربنس پورہ اور فتح گڑھ کا سروئے اور تھانہ میں آنے والے سائلین کی شکایات سنیں تو انکشاف ہوا کہ 2016ء میں 6074 شہری شکایات لے کر تھانے میں آئے۔ پولیس نے 1674 شہریوں کی درخواستوں پر مقدمات درج کیے۔ 1125 درخواستوں پر داد رسی نہ ہو سکی۔ پولیس نے سال 2016ء کے دوران 129 ملزمان کو اشتہاری قرار دیا، جس میں سے 61 اشتہاری گرفتار، 68 دندناتے پھر رہے ہیں۔ 2016ء میں تھانہ کی حدود میں 8 بیگناہ شہریوں کو قتل کیا گیا ۔ معمولی تنازع پر 4 افراد کو ہلاک کیا گیا۔ 2016 میں 63 شہریوں کو موٹرسائیکلوں جبکہ 10 شہریوں کو قیمتی گاڑیوں سے محروم کیا گیا۔ پولیس کسی ایک کو بھی گرفتار نہیں کر سکی ، خانہ پری کیلئے ایک آدھاملزم پکڑ کر سب اچھا کی رپورٹ ظاہر کی گئی۔ 2017ء کے تین ماہ میں اس تھانے کی حدود میں پتنگ بازی کے واقعات میں تیزی آئی۔ تھانہ میں 90 سے زائد اپر سبارڈی نیٹ اور لوئر سبارڈی نیٹ کی کئی سال سے کمی چلی آ رہی ہے ، گشت اور پٹرولنگ کا نظام بری طرح متاثر ہے۔ پولیس عامر ٹاؤن کے گیٹ کے سامنے اور ہربنس پورہ پل پرناکے لگا کر بے گناہ شہریوں کو تنگ کرتی ہے۔علاقہ میں اشتہاریوں نے اپنی آماجگاہ قائم کر رکھی ہے جس سے کرائم بڑھ رہا ہے وہاں علاقہ کے مکینوں کی زندگیاں اجیرن بن کر رہ گئی ہیں۔

مزید : علاقائی


loading...