پاکستان کے تمام اداروں کی ساکھ داو پر لگی ہوئی ہے،شیخ رشید

پاکستان کے تمام اداروں کی ساکھ داو پر لگی ہوئی ہے،شیخ رشید

ٹیکسلا( نمائندہ پاکستان )عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ پاکستان کے تمام اداروں کی ساکھ داو پر لگی ہوئی ہے،امید ہے 15 تاریخ تک یا قانون کا جنازہ نکل جائے گا یا ان کا،چھ سات سو ارب لوٹنے والے لوگ پچاس پچا س لاکھ میں ضمانتیں کروا رہے ہیں یہ بغیر کسی ڈیل کے ممکن نہیں، آج اس ڈیل کے حمام میں سب ننگے ہیں،قومی دولت لوٹنے والے سب اکٹھے ہیں ،لٹنے والے آپس میں دست و گریبان ہیں، ہمیں تقسیم در تقسیم کیا جارہا ہے،سادہ قوم جس نسخے سے بیمار ہوتی ہے پھر اسی کے پاس جاتی ہے،جتنے قبرستان بھرے پڑے ہیں سب لوگ یہی سمجھتے تھے کہ ان کے بغیر یہ کارخانہ اور کاروبار نہیں چلے گا،ٹیکسلا میں میڈیا سے گفتگو کے دوران شیخ رشید کا کہنا تھا کہ لوگوں کی یہ خام خیالی اب دور ہوجانی چاہئے کہ ان کے بغیر یہ ملک بحرانوں کا شکار ہوجائے گا،ٹیکسلا میں پریس کلب کی عدم دستیابی لمحہ فکریہ ہے ،ہمارا دور آیا تو سب سے پہلے ٹیکسلا کو پریس کلب دیں گے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ اس وقت پاکستان کی تاریخ اہم ترین دور سے گزر رہی ہے، میں جوتشی نہیں لیکن بتا رہا ہوں کہ یہ مہینہ ملکی سیاست میں بہت اہم ہے،ایک اندھے کو بھی نظر آرہا ہے کہ ملک میں کیاہورہا ہے ڈیل پے ڈیل ہورہی ہے ،چھ سات سو ارب لوٹنے والوں کی صرف پچا س پچاس لاکھ میں ضمانتیں منظور ہورہی ہیں،اگر حدینیہ کا فیصلہ بھی آجاتا کہ کہ ملک کے وزیر خزانہ اور وزیراعظم منی لانڈرنگ میں ملوث رہے ہیں تومیں نہیں سمجھتا کہ اس کے بعد وزیراعظم کے پاس اس منصف پر فائض رہنے کا کوئی اخلاقی جواز باقی رہ جاتا ہے،راحیل شریف کے دورمیں آیان علی نہ باہر جاسکتی تھیں اور نہ شرجیل اندر آسکتے تھے دونوں کے آنے جانے پر پابندی تھی آج اس ڈیل کے حمام میں سب ننگے ہوتے جارہے ہیں انکا کہنا تھا کہ ٹیکسلا ایک تاریخی شہر ہے جس سے میری بچپن کی یادیں وابستہ ہیں،دنیا میں کئی ہزار سال پہلے زہین افراد صرف ٹیکسلا میں پائے جاتے تھے،جو ٹیکسلا سے پڑھا ہوا نہ ہو اسے انسان نہیں سمجھتے تھے،اور آج اسی ٹیکسلا کی یہ صورتحال ہے کہ یہاں کے صحافیوں کو پریس کلب کی بلڈنگ تک دستیاب نہیں ، انھوں نے کہا کہ ہماری حکومت آئی تو صحافیوں کو پریس کلب دیں گے ،

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...