طاقت کے زور پر اسلام نافذ کرنیوالوں کی حمایت نہیں کریں گے :فضل الرحمٰن

طاقت کے زور پر اسلام نافذ کرنیوالوں کی حمایت نہیں کریں گے :فضل الرحمٰن

اسلام آباد(آن لائن ) جمعیت علمائے اسلام (ف )کے سرابراہ مولانا فضل الرحمن نے کہاہے کہ بندوق کے زور پر اسلام نافذ کرنے والوں کی حمایت نہ کرنے کی پاداش میں ہم پر خود کش حملے کئے گئے مگر بعض اوقات یورپ نے بھی ہمیں انتہا پسندوں کی صف میں کھڑا کر دیا آج بھی کہتا ہوں کہ طاقت کے زور پر اسلام نافذ کرنے والے دو فیصد انتہاپسندوں کی حمایت کسی صورت نہیں کریں گے ، جے یو آئی اقتدار میں آئی تو کرپشن کرپشن کی صدائیں سننے کو نہیں ملیں گی جب پورے ملک پر حکومت کروں گا تو میرے دور میں سب برابر ہونگے ان خیالات کا اظہار انہوں نے یورپی ممالک کے سفیروں کے اعزاز میں منعقدہ تقریب سے خطاب کے دوران کیا انہوں نے کہاکہ آج یورپی ممالک کے سفراء ہمارے درمیان موجود ہیں سفیروں کو بلانے مقصد جمعیت علماء اسلام کے اجتماع پر انھیں اعتماد میں لینا اور اسکے اغراض ومقاصد آپکے سامنے رکھنا ہے انہوں نے کہاکہ ہم پر امید ہیں کہ یورپی یونین ممالک کے سفیر ہمارے اجتماع میں شرکت کریں گے انہوں نے کہاکہ جمعیت علما اسلام کی 1919 میں بنیاد ڈالی گئی پرامن اور سیاسی اور عدم تشدد پر مبنی جدوجہد کا آغاز کیا تھاہم آنے والی نسلوں کو اپنا انداز سیاسی ان میں منتقل کرنا چاہتے ہیں انہوں نے کہاکہ ہر زمانہ میں مختلف مسائل سامنے آئے اس پر اختلاف رائے بھی رہا انہوں نے کہاکہ ایک بات واضح کردیں دیں اسلام کی بنیاد انسانی فلاح و بہبود ہے اسلام میں فلاح انسانیت کسی تعصب یا فرقہ واریت پر مبنی نہیں دین اسلام ہمیں اقوام عالم سے مثبت تعلقات کا درس دیتا ہے اپنی تعلمات اور دوسروں کی تعلمات سے استفادہ حاصل کرسکیں اسلام تمام انسانیت کی بھلائی کا دین ہے ۔اسلام میں کوئی تفریق یا زبان اور نسلی امتیاز نہیں مولانا فضل الرحمن نے کہاکہ دین اسلام ہمیں اقوام عالم سے مثبت تعلقات کا درس دیتا ہے اپنی تعلمات اور دوسروں کی تعلمات سے استفادہ حاصل کرسکیں ہمیں ایک دوسرے کے حقوق اور خود مختاری اور آزادی کا احترام کرنا چاہیاسلام میں فلاح انسانیت کسی تعصب یا فرقہ واریت پر مبنی نہیں دین اسلام ہمیں اقوام عالم سے مثبت تعلقات کا درس دیتا ہے اپنی تعلمات اور دوسروں کی تعلمات سے استفادہ حاصل کرسکیں اسلام تمام انسانیت کی بھلائی کا دین ہے ۔مولانا فضل الرحمن نے کہاکہ ہمارا مذہبی تشخص ہے مغرب میں ہمارے بارے میں جو تعصب ہے وہ تاثر ہم زائل نہیں کرسکے ہم سیاسی جماعت ہیں ہم حکومت میں نہیں تاہم ملک میں صوبائی حکومت کی اور مختلف حکومتوں میں رہے ہیں انہوں نے کہاکہ جب پورے ملک پر جے یوآئی کی حکومت ہوگی تو میرے دور میں سب برابر ہونگے اورہم ابھی سے وہ رویہ عوام میں اجاگر کرنا چاہتے ہیں انہوں نے کہاکہ ہمیں بین الاقوامی تعلقات اور کامیاب خارجہ پالیسی کا محور اچھے تعلقات کو بنانا چاہے یورپ سے منافع بخش تعلقات کا تبادلہ کرنا چاہتے ہیں سی پیک ایک اچھا موقع ہے ہم دنیا سے معاشی تعلقات مثبت چاہتے ہیں ہمیں اگے چل ایک دوسرے پر اعتماد کرنا ہوگا۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...