صوبے کے حقوق کے حصول کیلئے کوئی سستی نہیں برتی جائیگی:مظفر سید

صوبے کے حقوق کے حصول کیلئے کوئی سستی نہیں برتی جائیگی:مظفر سید

پشاور( سٹاف رپورٹر )خیبر پختونخوا کے وزیر خزانہ مظفرسید ایڈوکیٹ نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت این ایف سی ایوارڈ کے حوالے سے اپنے حقوق کے حصول کیلئے بھرپور طریقے سے آواز اٹھائے گی اور مذاکرات کے ذریعے سنجیدگی کے ساتھ معاملات کو حل کیا جائے گا۔ یہ بات انہوں نے پیر کے روز این ایف سی ایوارڈ کے حوالے سے پشاور میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں صوبائی حکومت کی این ایف سی کی رپورٹ سے متعلق مختلف امور زیر بحث آئے۔اجلاس میں مرکزی حکومت کی طرف سے این ایف سی کا اجلاس بلانے میں تاخیر پر شدید تحفظات کا اظہار کیا گیا اور امید ظاہر کی گئی کہ خیبر پختونخوا کے ساتھ باقی صوبائی حکومتیں بھی اس سلسلے میں بھرپور اقدامات اٹھائیں گی۔اجلاس میں دیگر امور کے علاوہ اس بات پر بھی غور کیا گیا کہ اس اہم مسئلے پر صدر مملکت اور چےئرمین سینٹ سے رابطہ کیا جائے گا تاکہ کوئی بہترحل نکالا جا سکے کیونکہ سال 2016-17بھی اختتام پزیر ہونے والاہے اور مرکزی حکومت نے تاحال این ایف سی کا چوتھا اجلاس طلب کرنے کیلئے کوئی اقدام نہیں اٹھایا جس کے نتیجے میں صوبائی حکومت کوبجٹ سازی میں سنگین مشکلات درپیش ہیں۔اجلاس میں اس رائے کا اظہار بھی کیا گیا کہ قانونی ماہرین کی مشاورت سے اس سلسلے میں اعلیٰ عدلیہ سے بھی رجوع کیا جائے گا اور یہ بھی فیصلہ ہوا کہ صوبے کے این ایف سی ایوارڈ سے متعلق امور طے کرنے کے لئے جلد ہ دوبارہ اجلاس کا انعقاد کر کے معاملات کو حتمی شکل دی جائے گی ۔اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ آئندہ اجلاس میں دیگر متعلقہ محکموں کو بھی مدعو کیا جائے گا تاکہ مرکزی حکومت کے ساتھ معاملات اٹھائے جا سکیں ۔اجلاس میں این ایف سی کے صوبائی ممبر پروفیس محمد ابراہیم، کنسلٹنٹ اور اعلیٰ حکام نے بھی شرکت کی۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...