عدالت سے ضمانت خارج ہونے پر گرفتار ہونیوالے ملزم کو سیاسی مداخلت پر چھوڑا گیا دوران انکوائری اے ایس پی کینٹ پر الزام

عدالت سے ضمانت خارج ہونے پر گرفتار ہونیوالے ملزم کو سیاسی مداخلت پر چھوڑا ...

ملتان(کرائم رپورٹر) عدالت سے ضمانت خارج ہونے پر گرفتار ملزم کو چھوڑنے کا معاملہ کینٹ تھانہ میں تعینات اسسٹنٹ سب انسپکٹر کا دوران انکوائری اے ایس پی کینٹ پر سنگین الزام(بقیہ نمبر27صفحہ12پر )

عائد کرنے کا انکشاف ۔ اپنے بیان میں اے ایس آئی مولوی طاہر کا کہنا ہے کہ اے ایس پی کینٹ شاہ نواز نے سیاسی مداخلت اور اثر رسوخ پر مقدمہ کمزور کر دیا اور گناہ گار ملزم کو ایک سیاسی شخصیت کی ایما پر چھوڑ دیا دوسری جانب اے ایس پی کینٹ نے دوران انکوائری بیان دیا ہے کہ ملزم کی گرفتاری التوا میں رکھی تھی، اور صلح کے لیے ملزم کو چھوڑا گیا اور تھانے کی حدود کا تعین بھی نہیں ہو رہا تھا واضح رہے کہ تھانہ کینٹ نے نے معروف ولد ولی محمد کی درخواست پر اس کے گھر میں داخل ہو کر تشدد کانشانہ بنانے کے الزام میں فہد ولد فخرالدین کے خلاف مقد مہ درج کیا تھا جس میں فہد نے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کی عدالت سے عبوری ضمانت کروائی جو کہ بعد ازاں خارج ہو گئی اور اسی طرح ہائی کورٹ سے بھی ضمانت خارج ہو گئی جس کو پولیس تھانہ کینٹ کے اے ایس آئی مولوی طاہر نے گرفتار کر لیا مگر قاسم بیلا کی ایک لیگی سیاسی شخصیت کی مداخلت پر ملزم کو تین گھنٹے بعد چھوڑ دیا گیا جس پر معروف نے آر پی او ملتان سلطان اعظم تیموری کو درخواست دی ۔ ان کی ہدایات پر ایس ایس پی آئی بی چوہدری سلیم اور ڈی ایس پی منصور عالم کے پاس انکوائری چل رہی ہے جس میں انچارج چوکی قاسم بیلا مولوی طاہر نے اے ایس پی شاہ نواز کے خلاف سنگین نوعیت کا بیان ریکارڈ کروایا ہے کہ پولیس تھانہ کینٹ میں درج مقدمہ میں سیاسی مداخلت نے مقدمہ کمزور کر دیا اور اے ایس پی نے ایک سیاسی شخصیت کے کہنے پر عدالت عالیہ سے گرفتار ہونے والے ملزم کو چھوڑ دیا۔معلوم ہوا ہے کہااے ایس پی کینٹ نے مذکورہ اے ایس آئی جو کہ حال تعینات انچارج چوکی قاسم بیلہ ہے اسے تھانہ رپورٹ کرنے کا حکم دیا ہے۔

اے ایس پی کینٹ الزام

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...