کراچی میں آئل ٹینکرز کی ہڑتال،پٹرول کی قلت پیدا ہوگئی

کراچی میں آئل ٹینکرز کی ہڑتال،پٹرول کی قلت پیدا ہوگئی
کراچی میں آئل ٹینکرز کی ہڑتال،پٹرول کی قلت پیدا ہوگئی

  


کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)شہر قائد میں پیٹرولیم مصنوعات کا بحران پیدا ہوگیا ہے ، کئی علاقوں میں پیٹرول کی قلت کی وجہ سے صارفین کومشکلات کا سامنا ہے۔میڈ یا رپورٹس کے مطابق سیلزٹیکس کیخلاف آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کی ہڑتال جاری ہے جس کے باعث شہر کے پیٹرول پمپس کو تین روزسے سپلائی بند ہے۔ پمپس پر پٹرول اور ڈیزل ناپید ہوگیا اور پٹرول اورڈیزل کی فراہمی نہ ہونے سے پمپس بند ہو رہے ہیں۔

ٹروکالر کی نئی ایپلیکیشن متعارف، گوگل ڈو کیساتھ انضمام کا بھی اعلان

چیرمین پٹرولیم ڈیلرزایسوسی ایشن سمیع خان کا کہنا ہے کہ 10 سے 20 فیصد پمپس سے قلت کی شکایات ملی ہیں تاہم شہرکے 75فیصد پمپس پر پٹرول اور ڈیزل دستیاب ہے، کچھ پٹرول پمپس پر ذخیرہ ختم ہوگیا ہے، پی ایس او کے پمپس پر پٹرول وافر مقدار میں موجود ہے ، اندرون سندھ صورتحال نارمل ہے جب کہ عوام کو ہدایت کی پٹرول کی غیرضروری خریداری سےگریز کیا جائے۔ترجمان آئل ٹینکرایسوسی ایشن اسرارشنواری نے خدمات پر سیلز ٹیکس کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ٹیکس واپس لینے تک پیٹرولیم مصنوعات کی سپلائی بند رہے گی، صوبائی حکومت سیلزٹیکس فوری واپس لے،انتظامیہ سے کوئی رابطہ نہیں کیا۔دوسری جانب پی ایس او حکام نے کہا ہے کہ چند پیٹرول پمپس پر پیٹرول اور ڈیزل ختم ہوا ہے، سیلز ٹیکس ختم کرنے کے مطالبے پر غور کیا جائے گا۔یاد رہے کہ تین روز قبل آئل ٹینکرز کنٹریکٹرز نے ملک بھر میں پیٹرولیم مصنوعات کی سپلائی روک دی تھی، چیئرمین آئل ٹینکرزکنٹریکٹرز نے خبردار کیا ہے کہ حکومت خدمات پرسیلز ٹیکس واپس لے، سیلزٹیکس واپس نہ لیا تو پاور پلانٹس کو سپلائی بند کردیں گے۔

مزید : بزنس


loading...