شادی سے قبل لڑکی تھا, آپریشن کے سال بعد بھی اذدواجی تعلقات قائم نہیں کرسکا، بھارتی تاجر طلاق کیلئے عدالت پہنچ گیا

شادی سے قبل لڑکی تھا, آپریشن کے سال بعد بھی اذدواجی تعلقات قائم نہیں کرسکا، ...
شادی سے قبل لڑکی تھا, آپریشن کے سال بعد بھی اذدواجی تعلقات قائم نہیں کرسکا، بھارتی تاجر طلاق کیلئے عدالت پہنچ گیا

  


ممبئی  (ویب ڈیسک) بھارت کے شہر ممبئی میں 31 سالہ تاجر نے شادی کی تنسیخ کیلئے عدالت سے رجوع کیا ہے اور دعویٰ کیا ہے کہ شادی سے قبل وہ لڑکی تھا اور جنس کی تبدیلی کے آپریشن کے ایک سال بعد ہونے والی اس شادی کے بعد بھی ازدواجی تعلقات قائم کرنے میں ناکام ہو چکا ہے، اسلئے شادی منسوخ کی جائے۔ ان کی اہلیہ نے بھی فیملی کورٹ سے رجوع کر لیا ہے اور گھریلو تشدد کے قانون کے تحت ایک لاکھ روپے ماہانہ نان نفقے اور ممبئی میں علیحدہ رہائش بطور ہرجانے کا دعویٰ دائر کیا ۔

روزنامہ جنگ کے مطابق باندرا میں دائر کیے گئے اس مقدمہ میں عدالت کے سامنے یہ سوال ہے کہ ہندو میریج ایکٹ کے تحت ایک عورت اور عورت کے بعد مرد میں تبدیل ہونے والے شخص کے درمیان ہونے والی شادی جائز ہے یا نہیں۔ گزشتہ ہفتے، عدالت نے مقدمہ کی سماعت کیلئے موسم گرما کی چھٹیوں کے بعد کی تاریخ مقرر کر دی کیونکہ اہلیہ اور ان کے وکیل میں سے کوئی عدالت کے روبرو پیش نہیں ہوا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...