شرقپور شریف: زیادتی کرنے والے ملزموں کا ضمانت کے بعد لڑکی کے گھر پر دھاوا

شرقپور شریف: زیادتی کرنے والے ملزموں کا ضمانت کے بعد لڑکی کے گھر پر دھاوا
شرقپور شریف: زیادتی کرنے والے ملزموں کا ضمانت کے بعد لڑکی کے گھر پر دھاوا

  


شیخوپورہ  (ویب ڈیسک) لڑکی سے زیادتی کرنے والے ملزموں کا ضمانت کے بعد لڑکی کے گھر پر اپنے ساتھیوں کے ہمراہ دھاوا۔ لڑکی کے اہلخانہ کو سنگین نتائج کی دھمکیاں لڑکی کے بھائی کو زدوکوب کرنے کے بعد اسلحہ لہراتے ہوئے فراراجتماعی زیادتی کا شکار ہونے والی مظلوم لڑکی کو مل کی پریس کانفرنس میں وزیراعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف سے انصاف فراہم کرنے کی اپیل اور ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچانے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق شرقپور کے محلہ ہرنی شاہ میں اجتماعی زیادتی کا نشانہ بننے والی 23 سالہ کومل نے اپنی پھوپھی ام کلثوم اور دیگر عزیز و اقارب کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ میرے ساتھ علی حسن اور محمد عمران نے گن پوائنٹ پر زیادتی کی اور مجھے بلیک میل کرتے رہے جس پر میرے اہل خانہ کو علم ہوا تو انہوں نے تھانہ شرقپور میں ملزموں کے خلاف مقدمہ درج کروایا لیکن اب بھی ملزمان کے بااثر ساتھی سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہے ہیں مجھے اور میرے اہلخانہ کو وزیراعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف تحفظ فراہم کریں اور ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچائیں۔ پ

ریس کانفرنس ختم کرنے کے آدھ گھنٹہ بعد ملزم علی حسن نے اپنے دیگر ساتھیوں کاشف علی، مشتاق علی، تجمل ودیگر کے ہمراہ اسلحہ اور ڈنڈنوں سوٹوں سے مسلح ہوکر لڑکی کے گھر دھاوا بول دیا اس کے بھائی تیمور طارق کو زدوکوب کیا اسلحہ لہراتے اور گالی گلوچ کرتے ہوئے فور ہوگئے، تھانہ شرقپور پولیس نے تیمور پولیس نے تیمور طارق کی درخواست پر علی حسن، کاشف علی، تجمل اور چھ نامعلوم کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے۔

مزید : شیخوپورہ


loading...