آرمی چیف اورعمران خان کی ملاقات میں نیشنل ایکشن پلان ،قومی اوربین الاقوامی امورپربات چیت ہوئی ،جب تک نوازشریف ہیں ادارے یرغمال رہیں گے :جہانگیر ترین

آرمی چیف اورعمران خان کی ملاقات میں نیشنل ایکشن پلان ،قومی اوربین الاقوامی ...
آرمی چیف اورعمران خان کی ملاقات میں نیشنل ایکشن پلان ،قومی اوربین الاقوامی امورپربات چیت ہوئی ،جب تک نوازشریف ہیں ادارے یرغمال رہیں گے :جہانگیر ترین

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان تحریک انصاف کے جنرل سیکرٹری جہانگیرترین نے کہاہے کہ آرمی چیف اورعمران خان کی ملاقات اچھے ماحول میں ہوئی ،ملاقات میں نیشنل ایکشن پلان ،قومی اوربین الاقوامی امورپربات چیت ہوئی ، ملاقات میں ڈان لیکس کامعاملہ بھی زیرغورآیا ۔

نجی ٹی وی کوانٹرویودیتے ہوئے پی ٹی آئی کے سیکرٹری جنرل جہانگیرترین نے کہاکہ آرمی چیف اورعمران خان کے درمیان ملاقات میں ڈان لیکس کامعاملہ بھی زیرغورآیا،ملاقات اچھے ماحول میں ہوئی ،ملاقات میں نیشنل اورانٹرنیشنل امورپرغورکیاگیا،افغان مہاجرین اورسیکورٹی امورپربھی بات چیت ہوئی ۔انہوں نے کہاکہ جب تک نوازشریف ہیں ادارے یرغمال رہیں گے ،پانامہ کیس کے فیصلے کاانتظارہے ،فیصلے پرقیاس آرائیاں مناسب نہیں ۔انہوں نے کہاکہ توقع ہے کہ پانامہ کیس کافیصلہ قومی مفادمیں آئے گا۔پی ٹی آئی پانامہ کیس کافیصلہ آنے کے بعداپنالائحہ عمل دے گی ۔انہوں نے کہاکہ اگلے انتخابات میں مردم شماری ڈیٹاآنے کے بعدہوں گے ۔اگلے الیکشن کیلئے تیارہیں اورسوشل میڈیاکے ذریعے بھرپورانتخابی مہم چلائیں گے ۔امریکی صدرڈونلڈٹرمپ نے بھی سوشل میڈیاکے ذریعے انتخابی مہم چلائی تھی ۔انہوں نے کہاکہ ن لیگ اورپی پی اسٹیٹس کوکی علامت ہیں ۔عمران خان کے پاس تبدیلی کابڑاویژن ہے ۔جہانگیرترین نے کہاکہ اسحاق کے اعترافی بیانات پردوبارہ تحقیقات ہونی چاہئیں توہین عدالت قانون میں ترمیم کیلئے لابنگ کاشک ہے ۔آرٹیکل184 تھری میں ترمیم کی ٹائمنگ پراعتراض ہوناچاہئے#/s#۔(یاسرعباسی)

مزید : قومی


loading...