نوجوان پاکستانی لڑکی کو یونیورسٹی سے گھر جاتے ہوئے اغواءکر لیا گیا،مسلسل زیادتی اور پھر چار روز بعد لاش کہاں سے اور کس حالت میں ملی؟ایسا انکشاف کے پورا ملک ہل کے رہ گیا

نوجوان پاکستانی لڑکی کو یونیورسٹی سے گھر جاتے ہوئے اغواءکر لیا گیا،مسلسل ...
نوجوان پاکستانی لڑکی کو یونیورسٹی سے گھر جاتے ہوئے اغواءکر لیا گیا،مسلسل زیادتی اور پھر چار روز بعد لاش کہاں سے اور کس حالت میں ملی؟ایسا انکشاف کے پورا ملک ہل کے رہ گیا

فیصل آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)فیصل آباد کی طالبہ کو جنسی بھیڑیوں نے اغوا کرکے مسلسل زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کر کے لاش نہر میں بہادی۔میڈ یا پر خبر نشر ہوئی تو سوشل میڈ یا صارفین نے بھی ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچانے کا مطالبہ کردیا ۔تفصیل کے مطابق جڑانوالہ شیرازی پارک کے رہائشی ندیم احمد کی بیٹی عابدہ احمد ایم اے انگلش کی طالبہ تھی جس کو پانچ روز قبل جی سی یونیورسٹی فیصل آباد سے باہر نکلتے ہوئے کار سوار 4 افراد نے اغوا کر کے مسلسل چار روز تک زیادتی کا نشانہ بنا یا اور پھر اسے قتل کر کے لاش نہر میں بہادی ۔

یہ خبر جلد ہی عابدہ کی تصویروں کے ساتھ سوشل میڈیا پر گردش کرنے لگی اب مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر بھی #JusticeForAbida کے نام سے ٹرینڈ بن چکا ہے جس پر صارفین افسوس کے اظہار کے ساتھ قاتلوں کو جلد پکڑ کر کڑی سے کڑی سزا کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

شہیرہ لاشاری نے کہا کہ قوم کی ایک اور بیٹی کے ساتھ بد سلوکی کے واقعے نے دل کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا ہے ۔

سمر فاطمہ نے کہا کہ عابدہ کے قاتلوں پر کسی قسم کا رحم نہ کیا جائے ۔

عثمان رضا نے کہا کہ جس دیس سے ماﺅں بہنوں کو اغیار اٹھا کر لے جائیں ،اس دیس کے ہر ایک لیڈر کو سولی پہ چڑھانا واجب ہے ۔

قاسم خان نے کہا کہ ابھی ہم زینب کے صدمے سے باہر نہیں نکلے تھے کہ ایک اور دل جھنجھوڑنے والا واقعہ پیش آگیا ۔

زہرہ فاطمہ نے کہا کہ خواتین پر تشدد بند کیا جائے ۔

مزید : انسانی حقوق /جرم و انصاف

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...