لاک ڈاؤن، سٹرکیں بند، پولیس کے ناکے، شہریوں کے پھر بھی سیر سپاٹے

  لاک ڈاؤن، سٹرکیں بند، پولیس کے ناکے، شہریوں کے پھر بھی سیر سپاٹے

  

  لاہور(خبرنگار) صوبائی دارالحکومت سمیت صوبہ بھر میں دوسرے روز بھی لاک ڈاؤن مزید سخت رہا، جمعتہ المبارک پر شہر کے داخلی و خارجی راستوں سمیت اہم شاہراہوں اور چوراہوں کو ہر قسم کی ٹریفک کے لئے بند کر دیا گیا جبکہ رات کو دوبارہ لاک ڈاؤن مزید سخت کر دیا گیا اور پولیس نے شہر کے داخلی و خارجی راستوں کو شہریوں کے لئے بند کر دیا۔ جمعتہ المبارک کے موقع پر پولیس نے مساجد کے سامنے ناکے لگائے رکھے اوربعض مقامات پرلاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کرنے والوں پر ڈنڈوں کی زبان بھی چلائی گئی۔ کرونا وائرس کی روک تھام اور صورتحال پر قابو پانے کے لئے دفعہ 144 کے نفاذسے شہریوں کو گھروں میں رہنے کی ہدایت کی گئی ہے جس کی خلاف ورزی پر بعض کو مقدمات کا سامنا بھی کرنا پڑ رہا ہے۔ آزادی چوک فلائی اوور سمیت دروغہ چوک سے ایک موریہ پل تک مکمل لاک ڈاؤن اور اسی طرح قربطہ چوک سے ضلع کچہری تک فیروز پو ر روڈ مکمل بند کر دیا گیا۔ جیل روڈ، مال روڈ، شاہراہ قائد اعظم، کینال روڈ، گلبرگ مین روڈ، جی پی او چوک، مزنگ چونگی، کیمپس پل، اکبر چوک، بھیکے والا چوک سمیت تمام اہم چوراہوں اور سڑکوں کو رکاوٹیں کھڑی کر کے بند کر دیا گیا۔ پولیس نے جمعہ کے موقع پرمساجد کے سامنے بھی ناکے لگا ئے رکھے جس کے باعث بعض مقامات پر شہری پولیس سے تکرار بھی کرتے رہے۔ رائے ونڈ میں پولیس نے بار بار ہدایت کے باوجود گھروں میں نہ بیٹھنے والوں کو مرغا بنا کر ڈنڈے برسائے۔ رات 8 بجے پولیس نے شہر میں لاک ڈاؤن کو دوبارہ سخت کر دیا شہر کے داخلی و خارجی راستوں کو ٹریفک کے لئے مکمل بند کر دیا گیا۔ڈی آئی جی آپریشنز رائے بابر سعید نے کہا ہے کہ شہر بھر میں گڈز ٹرانسپورٹ کو متاثر نہیں ہونے دیا اور ان کی نقل و حرکت آزادانہ جاری رہی۔انہوں نے کہا کہ علماء نے یقین دہانی کے باوجود بعض علاقوں میں اجتماعات کرائے۔

لاک ڈاؤن

مزید :

علاقائی -