بیروزگاروں کو تین ہزار ماہانہ امداد بہت کم ہے،عظمیٰ بخاری

بیروزگاروں کو تین ہزار ماہانہ امداد بہت کم ہے،عظمیٰ بخاری

  

لاہور(جنرل رپورٹر،لیڈی رپورٹر) مسلم لیگ (ن)پنجاب کی ترجمان عظمیٰ بخاری نے کہا ہے کہ بیروزگار افراد کو تین ہزار کی حکومتی امداد اونٹ کے منہ میں زیرہ ہے۔کروڑوں ڈالر کی امداد سے ایک مزدور کا کم ازکم پندرہ ہزارحصہ تو بنتا ہے۔ڈیم کے بعد کرونا فنڈ اربوں روپے ہضم کرنے کا منصوبہ ہے۔غریب اور دیہاڑی دار حکومتی ترجیحات میں شامل نہیں ہے۔عمران خان قرضے معاف کرانے کیلئے ڈرامے بازی کررہے ہیں۔عالمی مالیاتی ادارے پاکستان کو توقع سے زیادہ امدادی پیکجز دے رہے ہیں۔

حکومتی لوگ ڈپٹی کمشنرز کو اپنی تیار کردہ لسٹیں بھیج رہے ہیں۔شیخ رشید اور نذیر چوہان کی تیار کردہ لسٹین سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی ہیں۔زکوۃ اور صدقات کی رقم ذاتی مقاصد کیلیے استعمال کرنا پی ٹی آئی کا پرانا وطیرہ ہے۔حکومت غیر ملکی امداد سے سب سے پہلے ہسپتالوں کے عملے کو حفاظتی کٹس کی فراہمی یقینی بنائے۔عالمی مالیاتی اداروں کے امدادی پیکجز صرف ہسپتالوں اور بیروزگار افراد کیلئے دیے گئے ہیں۔حکومت کو ان امدادی پیکجز ہرگز اپنے چمچوں کو نوازنے کی اجازت نہیں دینگے۔عظمیٰ بخاری نے مزید کہا پنجاب حکومت کا صوبے کی عوام کیلئے دس ارب کا امدادی پیکج ناقابل قبول ہے۔پنجاب کے گیارہ کروڑ آبادی کیلئے دس ارب کا پیکج ناکافی ہے۔پنجاب حکومت صوبے کی آبادی کے تناسب سے امدادی پیکج جاری کرے۔وزیراعلیٰ پنجاب امدادی پیکج کا ازسرنو جائزہ لیں۔دیہاڑی دار مزدور حکومت کی جانب حسرت بھری نظروں سے دیکھ رہے ہیں۔پنجاب حکومت پندرہ روز سے راشن تقسیم کرنے کی پلائننگ کرنے میں مصروف ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -