انسداد کرونا، عالمی بینک کی پاکستان کو 20کروڑ ڈالر ہنگامی امداد دینے کی منظور ی،عالمی اقتصادیات کو 4کھرب ڈالر سے زائد نقصان پہچنے کا امکان، ایشیائی ترقیاتی بینک

انسداد کرونا، عالمی بینک کی پاکستان کو 20کروڑ ڈالر ہنگامی امداد دینے کی منظور ...

  

اسلام آباد،سنگاپور (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) عالمی بینک نے کروناوائرس کی وبا پرقابو پانے کیلئے پاکستان کو 20 کروڑ ڈالرکی ہنگامی امداد کی منظور ی دیدی،ضروری طبی آلات کیلئے3 کروڑ 80 لاکھ ڈالر مزید بھی فراہم کئے جائیں گے۔ دوسری طرف ایشیائی ترقیاتی بینک (اے ڈی بی)نے خبردار کیا ہے کہ نئے کرونا وائرس کی عالمگیر وبا سے عالمی اقتصادیات کو ہونے والے نقصانات کا حجم چار کھرب ڈالرز سے بھی زائد ہو سکتا ہے۔عالمی بینک کے اعلامیہ کے مطابق پاکستان کے لیے 20 کروڑ ڈالر امداد کی منظوری عالمی بینک کے ایگزیکٹو بورڈ نے دی ہے۔ عالمی بینک کی امداد پاکستان کو ہنگامی طور پر صحت کی ضروریات پورا کرنے اور کروناوائرس سے سماجی اور اقتصادی اثرات کم کرنے کے لیے استعمال کی جا سکے گی تاکہ غربت کا شکار افراد کو سہولیات فراہم کی جاسکیں۔اعلامیہ کے مطابق اس رقم کی بدولت پاکستان کے لیے کرونا مریضوں کا پتا چلانے اور بیماری کو مانیٹر کرنے کی صلاحیت میں اضافہ ہوگا جبکہ ہسپتالوں کو وینٹی لیٹرز سمیت طبی آلات اور عملے کیلئے حفاظتی سامان کی فراہمی میں بھی آسانی ہوگی۔قبل ازیں پاکستان اور عالمی بینک کے مابین کرونا وائرس فنانسگ ریلیف منصوبے کیلیے 200 ملین امریکی ڈالرکے معاہدے کی توسیع اور دستخط کی تقریب کا اہتمام اقتصادی امور ڈویژن میں کیا گیا، وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور محمد حماد اظہر نے تقریب میں شرکت کی۔وفاقی وزیر حماد اظہر نے ورلڈ بینک کی جانب سے فنانسگ ریلیف فراہمی پر عالمی بینک کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ پروجیکٹ کا بنیادی مرکز صحت کے شعبے پر ہو گا۔انہوں نے کہا کہ ورلڈ بینک کی مدد سے پاکستان میں کوویڈ19 کے خلاف جنگ میں مدد ملے گی، فنڈ نگ سے وائرس کی روک تھام، تشخیص اور علاج کے لئے اہم ضروریات کو پورا کیاجائے گا۔وفاقی وزیر نے کہا کہ ہماری اولین ترجیح غریبوں، کم اجرت والے طبقے کو کورونا کے اثرات سے بچانا ہے، منصوبے کا دائرہ ملک بھر میں ہوگا، جس میں ملک کے تمام صوبوں، علاقوں کو شامل کیا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ منصوبے کے تحت 4 ملین خاندانوں کو ہنگامی بنیادوں پر نقد رقم اور خوراک پہنچائی جائیگی۔اس کے علاوہ آن لائن تدریسی وہنر کلاسز کے ذریعے بچوں اور نوجوانوں کو وبائی مرض کے منفی اثرات سے بچایا جائیگا۔پاکستان میں عالمی بینک کے کنٹری ڈائریکٹرالانگوپیچوموتونے اس موقع پرکہاکہ عالمی بنک کرونا وائرس سے نمٹنے کی کوششوں میں پاکستان کے ساتھ اپنی معاونت کاسلسلہ جاری رکھے گا۔انہوں نے پاکستان کے شہریوں کیلئے نیک تمناوں کااظہارکرتے ہوئے انہیں وباء کے دنوں میں تمام ترحفاظتی وتدارکی اقدامات پرعمل پیراہونے کی ہدایت کی ہے۔ ادھر دوسری طرف ایشیائی ترقیاتی بینک (اے ڈی بی)نے خبردار کیا ہے کہ نئے کرونا وائرس کی عالمگیر وبا سے عالمی اقتصادیات کو ہونے والے نقصانات کا حجم چار کھرب ڈالرز سے بھی زائد ہو سکتا ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق اس ضمن میں گزشتہ روزجاری کردہ بیان میں منیلا میں قائم اس بینک نے یہ بھی کہا کہ اس پیش گوئی میں مختلف شعبہ جات کے طویل المدتی نقصانات شامل نہیں اور اسی لیے یہ حجم اور بھی زیادہ ہو سکتا ہے۔ اے ڈی بی کے مطابق رواں سال ایشیا کی اقتصادی نمو کی شرح 2.2 رہ سکتی ہے۔ اس بینک نے یہ بھی کہا کہ اگر لاک ڈاؤن اور بندشوں کی مدت کم کر دی جائے تو شاید نقصان میں کمی ہو سکے۔

عالمی بینک

مزید :

صفحہ اول -