غیرت معینہ مدت تک لاک ڈاؤن کے متحمل نہیں ہوسکتے، ڈی جی آئی ایس پی آر

غیرت معینہ مدت تک لاک ڈاؤن کے متحمل نہیں ہوسکتے، ڈی جی آئی ایس پی آر

  

اسلام آباد (آئی این پی)پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس اپی آر) کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل بابر افتخار نے کہا ہے کہ افواج پاکستان کورونا وائرس کی روک تھام کیلئے تمام وسائل بروئے کار لارہی ہیں جبکہ غیر معینہ مدت کے لیے لاک ڈاؤن کے متحمل نہیں ہوسکتے، اس وبانے عالمی ماحول کویکسرتبدیل کردیاہے، افواج پاکستان ملک کے کو نے کونے میں موجودہیں،38دنوں میں قوم نے اس چیلنج کابخوبی مقابلہ کیاہے، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی ہدایت کے مطابق عوام کو تحفظ فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ وبا سے بچاو کے لیے بھی فوج اپنا کردار ادا کررہی نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر قومی رابطہ کمیٹی کے تحت کام کررہا ہے اس کی سربراہی وفاقی وزیر اسد عمر کررہے ہیں اور لیفٹیننٹ جنرل حمود الزماں اس کے چیف کوآرڈی نیٹر ہوں گے۔جمعہ کو معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان کے ساتھ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر سے متعلق میڈیا کو بریفنگ میں انہوں نے کہا کہ 26 فروری سے اب تک 38 دنوں میں ہم نے بحیثیت قوم اس وبا کا اچھے انداز میں مقابلہ کیا ہے۔ ڈاکٹر، پیرا میڈکس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔انہوں ں ے کہا کہ علمائے کرام کاشکریہ ادا کرنا چاہوں گا جنھوں ں ے اس نازک وقت میں اتحاد کا پیغام دیا ہے اور عوامی آگاہی میں کردار ادا کیا۔ ہمیں رنگ و نسل، مذہب اور ہر طرح کی تفریق سے بالاتر ہوکر اس وبا کا مقابلہ کرنا ہوگا۔ان کا کہنا تھا کہ ملک کے کونے کونے میں پاک فوج وبا کی روک تھام میں مدد کے لیے سرگرم ہے۔ تمام فارمیشن کمانڈر،وفاقی اور صوبائی حکومتوں کوتعاون فراہم کررہے ہیں۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی ہدایت کے مطابق عوام کو تحفظ فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ وبا سے بچاو کے لیے بھی فوج اپنا کردار ادا کررہی ہے۔انہوں نے بتایا کہ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر قومی رابطہ کمیٹی کے تحت کام کررہا ہے۔ اس سینٹر سربراہی وفاقی وزیر اسد عمر کررہے ہیں ا ور لیفٹیننٹ جنرل حمود الزماں اس کے چیف کوآرڈی نیٹر ہوں گے۔ پورے ملک سے اطلاعات اس سینٹر کو فراہم کی جاتی ہے اور یہاں اس کا جائزہ لے کر تجاویز تیار کرکے قومی رابطہ کمیٹی کو فراہم کی جاتی ہیں۔ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ غیر معینہ مدت کے لیے لاک ڈاون کے متحمل نہیں ہوسکتے۔ تمام صوبوں، آزاد جموں کشمیر اور گلگت بلتستان میں طبی سامان اور افرادی قوت کو پہنچانے کا اہتمام کیا جارہا ہے۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر میں ایک چھت کے تلے تمام متعلقہ وزارتوں اور صوبوں کو نمائندگی حاصل ہے۔ موجودہ صورت حال میں عوام کا ریاست کیساتھ تعاون سب سے اہم ہے۔ یہ ایسا خطرہ ہے جس کے سامنے کوئی خدمت اور قربانی حیثیت نہیں رکھتی۔میجر جنرل بابر افتخار نے مزید کہا کہ میڈیا کا بھرپور تعاون درکار ہے۔ اب تک میڈیا نے معروضی رپورٹنگ کی ہے اور عوام کو آگاہی فراہم کی ہے۔ ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے میڈیا بریفنگ میں کہاکہ اس وبانے عالمی ماحول کویکسرتبدیل کردیاہے، افواج پاکستان ملک کے کو نے کونے میں موجودہیں،38دنوں میں قوم نے اس چیلنج کابخوبی مقابلہ کیاہے،ہمیں رنگ ونسل سے بالاترہوکراس وباکا مقابلہ کرنا ہے، اس جنگ کوجیتنے میں میڈیاکابھرپورتعاون درکارہے۔ ڈی جی آئی ایس پی آر کے ہمراہ میڈیا بریفنگ میں معاون خصوصی اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ نیشنل کمانڈاینڈ آپریشن کورونا سے متعلق اقدامات کا پلیٹ فارم ہے۔قومی حکمت عملی بنانے کے عمل میں مصروف ہیں۔وزیراعظم نے آرمی چیف اورتمام اداروں کی کاوشوں کوسراہا۔صوبائی حکومتیں کورونامتاثرین کاڈیٹاتشکیل دیں تاکہ مل کرحکمت عملی بنائیں۔ڈاکٹرفیصل نے وزیراعظم کوکورونا سے متعلق تمام معلومات دیں، وزیراعظم نے ہدایت کی ملک میں سپلائی لائن متاثرنہیں ہونی چاہیے، وزیراعظم نیذخیرہ اندوزوں،سمگلنگ کرنیوالوں کے خلاف کیخلاف سخت کارروائی کی ہدایت کی ہے، اس چھپے دشمن کو متحد ہوکر شکست دینی ہے، وبا سے بچا وزیراعظم کی اولین ترجیح ہے، تمام اداروں کے ساتھ مل کر اقدامات کررہے ہیں، ڈیٹا بینک بنایا جائے تاکہ جامع حکمت عملی پر نچلی سطح تک عملدرآمدکاجائزہ لیاجائے، لاک ڈاؤن کے اثرات سے متعلق بھی وزیراعظم کو آگاہ کیا گیا۔اسد عمراسٹیک ہولڈرزکیساتھ مل کرورکنگ پلان دیں تاکہ عملدرآمد ہو،وزیراعظم نیمتعلقہ محکموں کوہدایات دیں کہ ذخیرہ مافیا کی سرکوبی کی جائے، وزیراعظم نے کہا ہے کہ آٹے کی قلت اور کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔وزیراعظم نے گندم کی کٹائی سے متعلق بروقت اقدامات کیلئے ہدایات کیں، آٹے کی قلت کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائیگا، مستند معلومات اس وقت اہم ضرورت ہے،فردوس عاشق اعوان نے کہاکہکورونا سے متعلق نیشنل کمانڈ اینڈکنٹرول سینٹر ہی خبر فراہم کریگا۔

ڈی جی آئی ایس پی آر

مزید :

صفحہ اول -