دریائے، چناب کٹاؤ میں اضافہ، باغات، کھڑی فصلیں تباہ، کاشتکاروں کو کروڑوں کا نقصان

دریائے، چناب کٹاؤ میں اضافہ، باغات، کھڑی فصلیں تباہ، کاشتکاروں کو کروڑوں کا ...

  

ملتان ( نیوز رپورٹر  )وزیر توانائی پنجاب ڈاکٹراختر ملک،ڈپٹی کمشنر عامر خٹک اور سلیم لابر ایم پی اے نے گزشتہ روز دریائے چناب میں سیلاب سے متاثرہ علاقے کا دورہ کیا۔انہوں نے سیلاب سے متاثرہ محمد پور(بقیہ نمبر59صفحہ6پر)

گھوٹہ کا وزٹ کیا اورمتاثرین سے گفتگو بھی کی۔اس موقع پر صوبائی وزیر ڈاکٹر اختر ملک نے کہا کہ کاشکاروں کی گندم اور سٹرابری کی فصل متاثرہ ہونے کا دکھ ہوا ہے۔حکومت متاثرہ کسانوں کے نقصان کا ازالہ کرے گی،کسانوں کی انصاف امداد پروگرام سے مدد کی جائے گی، انصاف امداد کا سلسلہ ایک ہفتے میں شروع کر دیا جائے گا، ڈپٹی کمشنر عامرخٹک نے کہا کہ سیلاب سے متاثرہ ریونیو سرکل کا سروے شروع کر دیا گیا ہے، بہت جلد جامع رپورٹ حکومت کو ارسال کر دی جائے گی، کسانوں کے نقصان کاازالہ کیا جائے،ایم پی اے سلیم لابر نے کہا کہ دکھ کی اس گھڑی میں اپنے حلقے کی عوام کے ساتھ کھڑا ہوں، انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کی وباء کی مصروفیات کے باوجود انتظامیہ سروے کر رہی ہے۔وزیر اعلی سے ریلیف دلوانے کے لئے ملاقات کرونگا۔ دریں اثناء دریائے چناب میں سیلاب آنے سے فصلیں متاثر ہونے پرڈپٹی کمشنر ملتان عامرخٹک نے متاثرین کو ریلیف دینے کااعلان کیا ہے جب کہ ڈپٹی کمشنر کی ہدایت پر تین ریونیو سرکل کا سروے بھی شروع کر دیا گیا ہے۔متاثرہ یونیو سرکل میں شیرشاہ، بند بوسن اور نواب پور شامل ہیں۔اس سلسلہ میں اسسٹنٹ کمشنر صدر شہزاد محبوب نے متاثرہ موضع جات کا دورہ کیا اورڈپٹی کمشنر کو رپورٹ پیش کر دی ہے۔انہوں نے ریونیو سٹاف کو متاثرہ فصلوں کا تخمینہ لگانے کی ہدایت کر دی ہے،اسسٹنٹ کمشنرصدر شہزاد محبوب نے کہا ہے کہ ہیڈ تریموں کے مقام پر پانی کا بہاؤ1 لاکھ 54 ہزار کیوسک ہے،اس وقت ڈاؤن سٹریم پانی کا بہاؤ 70 ہزار کیوسک ہے،سیلاب سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا، شہزاد محبوب نے کہا ہے کہ ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی اور ریسکیو 1122 کو ریلیف کا کام شروع کرنے کی ہدایت بھی کر دی گئی ہے۔

دورہ

مظفرگڑھ (نامہ نگار) دریائے چناب میں پانی کی سطح میں خوفناک اضافہ ٰ کٹاؤ نے تباہی مچادی ہے آموں کے باغات دریا برداور کھڑی فصلیں تباہ تفصیل کے مطابق کرونا(بقیہ نمبر58صفحہ6پر)

کے عذاب کیساتھ سیلاب کا عذاب بھی نازل ہو چکا ہے دریائے چناب میں پانی کی سطح میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے جس سے ہزاروں ایکڑ رقبہ پرکاشتہ گندم ٰ چارہ و سبزی کی تیار فصلات دریا برد ہورہی ہیں جبکہ بیٹ کے مواضعات ٰ حاجی پور ٰ چک ابوالفتح و دیگر میں دریا کا کٹاؤ شدید ہوچکا ہے آم کے باغات دریا برد ہورہے ہیں متاثرین کا کروڑوں کا نقصان ہوچکا ہے اور وہ اپنی آنکھوں سے اپنامالی نقصان ہوتا دیکھ رہے ہیں انکا کوئی بس نہیں چل پارہا انکی راتوں کی نیندیں ٰ دن کا سکون برباد ہوچکا ہے ایک تو وہ پہلے ہی کرونا کے عذاب بھگت رہے تھے اوپر سے سیلاب کا عذاب ان پرمسلط ہو گیا ہے ضلعی انتظامی افسران متاثرین کی امداد فراہم اورانہیں کٹاؤ سے بچانے کیلئے موقع پر پہنچنے کی بجاؤ اپنے اپنے دفاتر سے غائب ہوکر ہوکر نامعلوم مقامات پر آئیسولیٹ ہیں سماجی ورکر ملک افضل پہوڑ نے بتلایا کہ وہ ضلعی افسران ڈپٹی کمشنر ٰ اسسٹنٹ کمشنر مظفرگڑھ کے دفاتر کے چکر لگا کر عاجز آچکے ہیں نہ کوئی افسر دفتر میں موجود ہوتا ہے نہ ہی کو?ی بات سننے کو تیار ہے متاثرین نے شدید احتجاج کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ پنجاب ٰ سیکرٹری آبپاشی و دیگر متلقہ افسران سے فوری نوٹس لیکر امداد ٹیمیں موقع پر بھجوانے کا مطالبہ کیا ہے

چناب

مزید :

ملتان صفحہ آخر -