پیرو،کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے لاک ڈائون کا انوکھا طریقہ متعارف

پیرو،کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے لاک ڈائون کا انوکھا طریقہ متعارف
پیرو،کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے لاک ڈائون کا انوکھا طریقہ متعارف

  

لیما (ڈیلی پاکستان آن لائن) پیرو میں صدر مارٹن وِزکرا کی حکومت نے کوروناوائرس کی وبا کے باعث ملک میں لاک ڈائون کا  ایک نیا اور غیر معمولی ضابطہ متعارف کرا دیا ہے۔ اس کے تحت لاک ڈاؤن کے دوران مردوں اور عورتوں کیلئے گھروں سے نکلنے کے علیحدہ علیحدہ دن مقرر کر دیئے گئے ہیں۔فرانسیسی خبر رساں ادارے کے مطابق صدر مارٹن وِزکرا نے کہا ہے کہ کوروناوائرس کی وبا کے باعث ملک بھر میں مردوں کو صرف پیر ، بدھ اور جمعہ کو گھروں سے باہر جانے کی اجازت ہوگی جبکہ خواتین کو منگل ، جمعرات اور ہفتہ کو باہر گھر سے باہر جانے کی اجازت ہے۔

اتوار کے دن کسی کو بھی باہر جانے کی اجازت نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس اس بیماری پر قابو پانے کےلئے10 دن باقی ہیں۔انہوں نے کہا کہ لاک ڈاو¿ن 16 مارچ کولگا دیا تھااور پابندیوں کا اطلاق 12 اپریل تک جاری رہے گا۔

پیرو میں صرف 1400سے زیادہ کورونا وائرس کے کیسز اور 55 اموات ریکارڈ کی گئیں۔وزکرا نے کہا کہ اس اقدام کا مقصد لوگوں کی نصف تعداد کو کم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان پابندیوں کا اطلاق ان افراد پر نہیں ہوگا جو گروسری سٹورز ، بینکوں ، فارمیسیوں اور ہسپتالوں میں ملازمت کررہے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -