وزیر اعظم کا تعمیراتی شعبے کو پیکج، پراپرٹی ٹائیکون زاہد اسلام بھی میدان میں آگئے، ایسے فوائد بتادیے کہ اپنا گھر پانے کے خواہشمند خوشی سے اچھل پڑیں

وزیر اعظم کا تعمیراتی شعبے کو پیکج، پراپرٹی ٹائیکون زاہد اسلام بھی میدان میں ...
وزیر اعظم کا تعمیراتی شعبے کو پیکج، پراپرٹی ٹائیکون زاہد اسلام بھی میدان میں آگئے، ایسے فوائد بتادیے کہ اپنا گھر پانے کے خواہشمند خوشی سے اچھل پڑیں

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) تعمیراتی شعبے میں اپنی منفرد پہچان بنانے والے”ویلیو گروپ“ کے چیئرمین اور معروف سیاسی و سماجی رہنما  میاں زاہد اسلام نے   وزیر اعظم عمران  خان کی جانب سے تعمیراتی شعبے کے لیے اعلان کردہ تاریخی پیکیج کو بہترین قرار دیتے ہوۓ کہا ہے کہ اس پیکج کے بعد ایک عرصے بعد ہاؤسنگ سیکٹر میں نئی جان پڑ گئی ہے ،وزیر اعظم کا اعلان کردہ پیکج ہاؤسنگ سیکٹر کے لئے گیم چینجر ثابت ہوگا،کوئی بھی حکومت اس سے بہتر،جامع اور بزنس فرینڈلی پیکج دے ہی نہیں سکتی تھی۔

تفصیلات کے مطابق میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے میاں زاہد اسلام نے کہا کہ تعمیراتی شعبے کے لیے وزیراعظم عمران خان کی جانب سے پیکج کے اعلان کا خیر مقدم کرتے ہیں ،اس پیکج سے نہ صرف تعمیراتی شعبے کو ترقی ملے گی بلکہ اس سے پاکستان کی معیشت کو بھی استحکام حاصل ہوگا، تعمیراتی شعبے کیلئے مراعاتی پیکج کے بعدملک بھر میں تعمیراتی سرگرمیوں میں اضافہ ہو گااورلوگوں کو روزگار کے وسیع مواقع میسر آئیں گے،اس پیکج کے بعد تعمیرات سے وابستہ درجنوں صنعتوں کی کاروباری سرگرمیاں بڑھیں گی اور ملک کی معیشت کو بھی مستحکم کرنے میں مدد ملے گی ۔میاں زاہد اسلام نے کہا کہ وزیر اعظم کی طرف سے دیا جانے والا تعمیراتی پیکج ایک مکمل پیکج ہے،فکسڈ ٹیکس کی سب سے بڑی ڈیمانڈ تھی جسے وزیر اعظم نے پورا کر دیا ہے ،فکسڈ ٹیکس سکیم کو لایا گیا ہے اور اس میں جو بھی ریٹس ہوں گے کمرشل اور ریذیڈنشل کے پر سکیئر فٹ کے حساب سے  جتنے سال کا پراجیکٹ ہو گا اتنے سال میں تقسیم کر کے حکومت کو  دینا ہوں گے ۔انہوں نے کہا کہ 

 وزیر اعظم نے تعمیراتی پیکج میں ایک اور بینیفٹ دیا  ہے جس میں ٹرانسفر آف پراپرٹی ،پرسنٹ ایج کاسٹ پہلے 9 فیصد تک چلی جاتی تھی  اب  دو فیصد وفاق اور دو فیصد صوبہ لے گا اس طرح اس میں بھی پانچ فیصد کمی ہوئی ہے ،تیسرا ہاؤسنگ سیکٹر میں کی جانے والی انویسٹمنٹ کے بارے سورس کے حوالے سے کوئی پوچھ گچھ نہیں ہو گی ،ہاؤسنگ سیکٹر کو انڈسٹری کا درجہ دے دیا گیا ہے ،یہ بھی ہمارا بہت دیرینہ مطالبہ تھا ،پانچواں رئیل سٹیٹ ٹرسٹ بنایا جائے گا جو پراپرٹی معاملات کو ریگولیٹ کرے گا ،وہ لوگ جو پیسے لیکر بھاگ جاتے ہیں اور پھر سب کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ،وہ مشکلات اب ختم ہو جائیں گی ۔

میاں زاہد اسلام نے کہا کہ حکومت نے مورگیجز پر سبسڈی دینے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ موگیجز  چھے سے سات فیصد پر مہیا کرے گی جس سے پراپرٹی کے بزنس میں بوم آئے گا ،نیا پاکستان ہاؤسنگ سکیم کے نوے فیصد ٹیکس حکومت نے معاف کر دئیے ہیں ،ایک مکان جو آپ اپنے لئے خریدتے ہیں تو آپ سے سورس آف انکم کا نہیں پوچھا جائے گا ،ماضی میں نیب کی جانب سے مالدار لوگوں سے منی ٹریل مانگنے کی وجہ سے سرمایہ کار خوفزدہ رہتا تھا، اب وہ حکومت کے کسی خوف کےبغیر ہاؤسنگ سیکٹر میں سرمایہ کاری کر سکیں گے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں پہلی مرتبہ ہاؤسنگ سیکٹر کے لئے حکومت نے ایک مکمل پیکج کا اعلان کیا ہے جس کی ماضی میں کوئی مثال نہیں ملتی لہذا وہ لوگ جن کے پاس وائٹ یا بلیک منی ہے وہ کسی ڈر اور خوف کے بغیر ہاؤسنگ سیکٹر میں سرمایہ کاری کریں اور ملکی معیشت کو مستحکم کرنے میں اپنا کردار ادا کریں ۔  

مزید :

رئیل سٹیٹ -