آئی ایم ایف کا ایک اور پروگرام بہت ضروری ،شرائط اتنی آسان نہیں ہوں گی،وزیراعظم شہبازشریف

آئی ایم ایف کا ایک اور پروگرام بہت ضروری ،شرائط اتنی آسان نہیں ہوں ...
آئی ایم ایف کا ایک اور پروگرام بہت ضروری ،شرائط اتنی آسان نہیں ہوں گی،وزیراعظم شہبازشریف

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم شہبازشریف کا کہنا ہے کہ ہمارے لئے آئی ایم ایف کا ایک اور پروگرام بہت ضروری ہے،نئے پروگرام کے خدوخال گفتگو کے بعد سامنے آئیں گے،آئی ایم ایف کی شرائط اتنی آسان نہیں ہوں گی،ہماری سوچ ہونی چاہئے غریب آدمی اور ٹیکس دہندگان پر بوجھ کم ہو۔

وزیراعظم شہبازشریف نے کابینہ اجلاس سے خطاب کرتے  ہوئے کہاکہ وزارت خزانہ، پاور، پیٹرولیم ، زراعت اور ایکسپورٹ کے حوالے سے میٹنگز کیں،ایس آئی ایف سی کا ملکی معیشت کی بہتری میں کلیدی کردار ہے،مہنگائی میں بتدریج کمی ہو رہی ہے،مہنگائی، بیروزگاری، غربت میں کمی کیلئے دن رات کاوشیں کرنی ہیں،ان کا کہناتھا کہ آئی ایم ایف کیساتھ سٹینڈ بائی معاہدےکی 1.1ارب ڈالر کی قسط مل جائیگی،وزیر خزانہ اپنی ٹیم کیساتھ جارہے ہیں، آئی ایم ایف کے نئے پروگرام پر میٹنگ ہوگی، ایف بی آر کی ڈیجیٹائزیشن پر تیزی سے کام ہورہا ہے۔

وزیر اعظم نے کہاکہ آئی ٹی کا ملک کی ترقی اور ایکسپورٹ میں بڑا کردار ہے،پی آئی اے کی نجکاری پر عملدرآمد ہو رہا ہے،ایئرپورٹ کی آؤٹ سورسنگ پر فیصلے کررہے ہیں،لاہور اور کراچی ایئرپورٹس کے حوالے سے جلد میٹنگ بلاؤں گا،ان کا کہناتھا کہ  ترکیہ کی ایک کمپنی پاکستان کا دورہ کررہی ہے،میں اور خواجہ آصف کمپنی کے وفد سے ملاقات کریں گے،طے کیا گیا تھا بین الاقوامی سرمایہ کاروں کو پاکستان لائیں گے،

ان کا مزید کہناتھا کہ چینی سفیر کے ساتھ خود داسو گیا تھا،چینی انجینئرز اور ورکرز کو تسلی دی،ہلاک چینی انجینئرز کی لاشوں کو اس کے وطن پہنچا دیا گیا۔

وزیراعظم شہبازشریف نے کہاکہ کابینہ منظوری کے بعد انکوائری کمیشن بنانے کا فیصلہ کیا تھا،ہم نے انکوائری کمیشن کو نوٹیفائی کیا،سپریم کورٹ نے سوموٹو ٹیک اپ کرلیاہے،کل پروسیڈنگ ہوئی ہیں، سب آگاہ ہیں،سپریم کورٹ خود اس معاملے کو ڈیل کررہی ہے،ہم نے اپنی ذمہ داری پوری کردی تھی،کل مختلف ججز کو خطوط موصول ہوئے تھے،خطوط میں پاؤڈر کے حوالے سے باتیں سامنے آئی ہیں،ہمیں ذمہ داری کا مظاہرہ کرنا چاہئے،اس معاملے میں سیاست کو نہیں آنے دینا چاہئے،معاملے کی تحقیقات کرائیں گے تاکہ دودھ کا دودھ پانی کا پانی ہو۔