ملا عمر کی ہلاکت کے بعد قطر میں طالبان کے سیاسی دفتر کے امیر اپنے عہدے سے مستعفی

ملا عمر کی ہلاکت کے بعد قطر میں طالبان کے سیاسی دفتر کے امیر اپنے عہدے سے ...
ملا عمر کی ہلاکت کے بعد قطر میں طالبان کے سیاسی دفتر کے امیر اپنے عہدے سے مستعفی

  

دوہا (مانیٹرنگ ڈیسک)قطر میں افغان طالبان کے سیاسی دفتر کے سربراہ نے اپنے امیر اور قائد ملا محمد عمر کی موت کے اعلان کے بعد اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔بی بی سی نیوز کے مطابق اپنے ایک بیان میں سیاسی دفتر کے سربراہ سید محمد طیب آغا نے کہا کہ تنظیم اپنے تمام امور بشمول نئے سربراہ کا انتخاب افغانستان کے اندر ہی طے کرے۔ان کا استعفیٰ بظاہر ملا عمر کی موت کے بعد تنظیم میں تقسیم کے پیش نظر آیا ہے۔ ملا عمر کی موت کے بعد گذشتہ ہفتے افغان طالبان کی شوریٰ نے پاکستان میں ملا اختر منصور کو اپنا نیا امیر مقرر کیا تھا لیکن طیب آغا نے اپنے بیان میں ان کا براہِ راست کوئی ذکر نہیں کیا ہے۔ملا عمر کی موت کی خبر کو چھپانے کو طیب آغا نے تاریخی غلطی قرار دیا۔ان کا کہنا تھا کہ مستقبل کے ممکنہ تنازعے، اللہ کے سامنے قابل گرفت ہونے ،اپنے ضمیر کو دبانے اور امیر المومنین ملا محمد عمر کے تصور اور پالیسوں سے انحراف نہ کرنے کے خیال سے کئی دنوں تک خوب غور و خوض کرنے کے بعد نیک نیتی کے ساتھ میں نے سیاسی دفتر کے ڈائریکٹر اور سیاسی امور کے سربراہ کی حیثیت سے مستعفی ہونے کا فیصلہ کیا۔انہوں نے کہاک وہ ملا عمر کی ہلاکت کے بعد کسی بھی فرق کے حامی نہیں ہیں ۔

مزید : بین الاقوامی