بھارتی سپریم کورٹ نے بالی ووڈ کے مشہور مزاحیہ اداکار راجپال یادو کو 6دن کے لئے جیل بھیجنے کا حکم دے دیا

بھارتی سپریم کورٹ نے بالی ووڈ کے مشہور مزاحیہ اداکار راجپال یادو کو 6دن کے ...
بھارتی سپریم کورٹ نے بالی ووڈ کے مشہور مزاحیہ اداکار راجپال یادو کو 6دن کے لئے جیل بھیجنے کا حکم دے دیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)بھارتی سپریم کورٹ نے بالی ووڈ کے مشہور مزاحیہ اداکار راجپال یادو کو عدالت میں جھوٹے حلف نامے جمع کرانے اور اپنے جھوٹ پر قائم رہنے کے جرم میں 6دن کی قید کا حکم سناتے ہوئے جیل بھیجنے کی سزا سنا دی ہے ۔

بھارتی نجی چینل ’’این ڈی ٹی وی ‘‘ کے مطابق راجپال یادو نے 2010میں ایک کاروباری شخصیت سے 5کروڑ قرض لے کر فراڈ کیا تھا جس پر راجپال پر کیس کر دیا تھا ،قرض نہ ادا کرنے پر دہلی ہائی کورٹ میں چل رہے کیس میں وہ کئی بار جھوٹے وعدے کر چکے تھے ، جس پر 2014ء میں ہائی کورٹ نے راجپال کو10 دن کے لئے جیل بھیجنے کی سزا سنائی تھی ،راجپال یادو نے سزا کے خلاف اپیل کی تو دہلی ہائی کورٹ کے ڈبل بنچ نے ان کی سزا معطل کر دی تھی لیکن پھر بھی بھارتی فلموں کے مشہور مزاحیہ اداکار کو 4دن جیل میں گزارنے پڑے تھے۔ بھارتی سپریم کورٹ کے جج جسٹس ایس رویندر بھٹ اور جسٹس دیپا شرما کے بنچ نے دسمبر2013ء میں ہائی کورٹ کی جانب سے راجپال یادو کو 10دن کی’’ جیل یاترا ‘‘ کی سزا برقرار رکھتے ہوئے انہیں 6دن کے لئے جیل بھیجنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ طریقہ کار پر عمل کرنے میں یادو کی ناکامی کو قبول نہیں کیا جا سکتا، اپنے طرز عمل کے بارے میں وضاحت دینے کے لئے راجپال یادوکافی وقت دیئے جانے کے باوجود جھوٹ پر قائم رہے۔بنچ نے کہا تھا کہ اس معاملے کی طویل تاریخ بتاتی ہے کہ بار بار حلف نامہ کی خلاف ورزی ہوئی اور جب یہ پوچھنے کے لئے ان کو عدالت میں بلایا گیا کہ ان کے خلاف کارروائی کیوں نہ کی جائے تو یہاں بھی انہوں نے نہ صرف جھوٹے اور ٹالنے والے جواب دیئے بلکہ جھوٹے حلف نامے کو بھی درست قرار دیا ،سپریم کورٹ نے سماعت مکمل کرتے ہوئے راجپال یادو کو 10دن قید کی سزا کو برقرار رکھتے ہوئے 6دن کے لئے جیل بھیجنے کا حکم سنا دیا۔

مزید : تفریح