بڑی ترقیاتی سکیموں کی تھرڈ پارٹی انسپکشن لازمی قرار دیدی گئی

بڑی ترقیاتی سکیموں کی تھرڈ پارٹی انسپکشن لازمی قرار دیدی گئی

لاہور( جنرل رپورٹر)لاہور ڈویژن نے بڑی ترقیاتی سکیموں کی تھرڈ پارٹی انسپکیشن لازمی قرار دیدی گئی ہے جس کے لئے لازم ہو گا کہ تمام سرکاری محکمے زیر تکمیل تمام ترقیاتی سکیموں کی تھرڈ پارٹی انسپکشن کروانے کے پابند ہوں گے واجبات کی ادائیگی اور تکمیل ہونے والی سکیم کو متعلقہ محکمے کے حوالے اس وقت تک نہیں کیا جائے گا جب تک تھرڈ پارٹی انسپیکشن ٹیم اپنی رپورٹ پیش نہیں کرے گی ۔یہ فیصلے گزشتہ روز کمشنر لاہور عبداللہ سنبل کی صدارت میں منعقد ہونے والے اجلاس میں کئے گئے ۔اجلاس میں مختلف ترقیاتی سکیموں کی منظوری بھی دی گئی ۔ کمشنر لاہور ڈویژن عبداﷲ خان سنبل نے کہا ہے کہ صوبائی سطح کی ترقیاتی اسکیموں کی تھرڈ پارٹی تصدیق لازمی ہے۔ ترقیاتی اسکیم کی تکمیل کے بعد مقامی سطح پر اس کا افتتاح کرایا جائے جبکہ ترقیاتی اسکیموں کی تکمیل کے فوری بعد متعلقہ محکموں کو سپردگی و حوالگی میں کوئی تاخیر نہ کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ جب اسکیم 80فیصد مکمل ہو جائے اور سو فیصد تکمیل کے لیے فنڈز موجود ہوں تو مطلوبہ ہیومن ریسورس کے حصول کے لیے کارروائی کو شروع کر دیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ ہر ترقیاتی اسکیم کا مکمل پی سی ون بھی جمع کرایا جائے۔ بعدازاں کمشنر لاہور ڈویژن کی ہدایت پر دوسرے اجلاس میں رکن صوبائی اسمبلی سجاد حیدر نے سال 2015-16 کی جاری ترقیاتی اسکیموں کا جائزہ لیا۔ جس میں ڈائریکٹر ڈویلپمنٹ چوہدری امجد، ڈی سی او ننکانہ سائرہ عمر، ڈی سی او قصور عمارہ خان، اے ڈی سی شیخوپورہ، ایس ای پبلک ہیلتھ انجینئرنگ، بلڈنگ، تمام اضلاع کے ڈسٹرکٹ آفیسر پلاننگ و دیگر افسران نے شرکت کی۔کمشنر لاہور ڈویژن عبداﷲ خان سنبل کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں 31فلٹریشن پلانٹس کی اسکیموں کی منظوری دی گئی جن میں سے 13 پلانٹ ریورس اوسموسس فلٹریشن پلانٹس اور 18 پلانٹس الٹرا فلٹریشن کے ہیں۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ ریورس اوسموسس فلٹریشن پلانٹس ہڈیارہ ڈرین اور صنعتی علاقوں کے قریب آبادیوں میں لگائے جائیں گے جو کہ غیر کمرشل ہیں۔ ریو رس اوسموسس پلانٹس لگانے کا فیصلہ تمام تکنیکی اداروں کی مشاورت سے کیا گیا ہے اور یہ پنجاب صاف پانی کمپنی کے پلانٹس کے علاوہ ہیں۔ دوسرے اجلاس میں بتایا گیا کہ صوبائی سالانہ ترقیاتی اسکیموں 2016-17 میں ضلع لاہور کی 260، ضلع شیخوپورہ کی 88، ضلع ننکانہ صاحب کی 29 اور ضلع قصور کی 75 اسکیموں کو شامل کیا گیا ہے جن کو جلد منظوری کے لیے ڈویژنل سطح پر پیش کیا جائے گا۔ اس سلسلے میں اجلاس کے دوران مجموعی طور پر 452 ترقیاتی اسکیموں کا جائزہ لیا گیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1