شہباز شریف کا ون ویلنگ کرنے والوں کے خلاف بلا امتیاز کریک ڈاؤن کا حکم

شہباز شریف کا ون ویلنگ کرنے والوں کے خلاف بلا امتیاز کریک ڈاؤن کا حکم

  

لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی زیرصدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس منعقد ہوا جس میں یوم آزادی کی تقریبات کے موقع پر سکیورٹی انتظامات، ٹریفک مینجمنٹ اور ون ویلنگ کی روک تھام کے حوالے سے حکمت عملی کا جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوام کے جان و مال کے تحفظ سے بڑھ کر کوئی چیز مقدم نہیں، اس لئے 14 اگست کی تقریبات کیلئے فول پروف سکیورٹی ہر قیمت پر یقینی بنائی جائے اور عوام کے جان و مال کے تحفظ کیلئے تمام ضروری اقدامات کئے جائیں۔انہوں نے کہا کہ یوم آزادی کی تقریبات کے موقع پر سیکورٹی انتظامات میں کوئی کسر اٹھا نہ رکھی جائے۔ پولیس، قانون نافذ کرنے والے ادارے اور انتظامیہ چوکس رہیں اور سکیورٹی کے جامع اور موثر پلان پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے۔ ون ویلنگ کرنے والوں کے خلاف بلاامتیاز کریک ڈاؤن کا حکم دیتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ میں ون ویلنگ کسی صورت برداشت نہیں کروں گا۔وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ ون ویلنگ روکنے کیلئے خصوصی ٹیمیں تشکیل دی جائیں اور جس ضلع سے ون ویلنگ کی شکایت سامنے آئی، متعلقہ پولیس افسر کے خلاف کارروائی ہوگی اورون ویلنگ کرنے والوں کو قانون کے تحت سزا ملے گی۔وزیراعلیٰ نے مزیدہدایت کی کہ کم عمر افراد کے خلاف گاڑی یا موٹر سائیکل چلانے پرقانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے۔ وزیراعلیٰ نے سرچ اینڈ سویپ آپریشن مزید تیز کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ جرائم پیشہ افراد اور سماج دشمن عناصر کے خلاف صوبے بھر میں موثر انداز میں کارروائی کی جائے اور ایسے افراد کی بیخ کنی کیلئے کوئی کسر اٹھا نہ رکھی جائے۔ انہوں نے کہا کہ عوام کے جان و مال کے تحفظ کیلئے ہرممکن اقدام اٹھایا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ حساس اور پبلک مقامات کے ساتھ مارکیٹوں، بازاروں اور دیگر اہم جگہوں پر پولیس کی اضافی نفری تعینات کی جائے اور داخلی و خارجی راستوں کی کڑی نگرانی کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ ہوائی فائرنگ یا اسلحہ کی نمائش کرنے والوں کے خلاف بھی قانون کو فوری طور پر حرکت میں آنا ہوگا۔ صوبے میں قانون کی عملداری یقینی بنانے کیلئے پولیس کو فعال اور متحرک انداز میں کام کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پولیس اور قانون نافذ کرنے والے ادارے قریبی رابط رکھتے ہوئے فرائض سرانجام دیں۔ انہو ں نے کہا کہ یوم آزادی پر عوام کی سہولت کیلئے لاہور، مری اور دیگر بڑے شہروں میں ٹریفک مینجمنٹ کیلئے بہترین اقدامات ہونے چاہئیں خصوصاً 14 اگست کو مری میں ٹریفک رواں دواں رکھنے کیلئے جامع منصوبہ بندی کرکے اقدامات کو حتمی شکل دی جائے، اس ضمن میں متبادل روٹس کے ساتھ پارکنگ کیلئے بھی متبادل مقامات کیلئے اقدامات کئے جائیں تاکہ عوام کو کسی قسم کی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔ سیکرٹری داخلہ اور انسپکٹر جنرل پولیس نے یوم آزادی کی تقریبات کے موقع پر سکیورٹی انتظامات، ٹریفک مینجمنٹ اور ون ویلنگ کی روک تھام کے حوالے سے کئے جانے والے اقدامات کے بارے میں بریفنگ دی۔معاون خصوصی رانا مقبول احمد، ایم پی اے جہانگیر خانزادہ، چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل پولیس، سیکرٹری داخلہ اور اعلیٰ پولیس حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی زیرصدارت اعلی سطح کا اجلاس منعقد ہوا،جس میں ساہیوال میں کول پاورپلانٹ کے منصوبے پر پیشرفت اور پراجیکٹ کیلئے کوئلے کی ترسیل کے اقدامات کا جائزہ لیا گیا۔وفاقی وزیر پانی و بجلی خواجہ محمد آصف،وفاقی وزیر پورٹس اینڈ شپنگ میر حاصل خان بزنجو، وفاقی سیکرٹری پانی و بجلی،سیکرٹری وزیراعظم ،چےئرمین پورٹ قاسم اتھارٹی،چےئرمین منصوبہ بندی وترقیات،چیف ایگزیکٹو آفیسر پاکستان ریلویز،ایم ڈی این ٹی ڈی سی ،چین کے ہیوانگ گروپ کے ایم ڈی ہو چن شنگMr. Wu ChunSheng ، ہیوانگ شین ڈؤنگ پاورجنریشن کمپنی کے نائب صدر، چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیوانگ شین ڈؤنگ رویائی اور متعلقہ وفاقی و صوبائی حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔وزیر اعلی شہباز شریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ساہیوال میں کول پاورپلانٹ کا منصوبہ انتہائی تیز رفتاری سے مکمل کیا جا رہا ہے اور 1320 میگاواٹ کا یہ منصوبہ دسمبر 2017 ء کی مقررہ مدت سے کہیں پہلے مکمل ہو گا ۔ انہوں نے کہا کہ چین سمیت دنیا کی تاریخ میں اتنے پیداواری گنجائش کے منصوبے پر ایسی تیز رفتاری سے کام کرنے کی مثال نہیں ملتی۔ منصوبے کی رفتار اور معیار بے مثال ہے ۔انہوں نے کہا کہ کوئلے کی کراچی سے ترسیل کے کام کو بھی مقررہ وقت پر مکمل کیا جائے گا اور اس مقصد کے لئے ضروری انفراسٹرکچر بھی وقت پر مکمل ہو گا ۔انہوں نے کہا کہ یہ منصوبہ پاک چین دوستی کا عظیم شاہکار بنے گا ۔متعلقہ وفاقی اور صوبائی اداروں کی بہترین کوارڈینیشن سے تمام امور وقت پر مکمل ہورہے ہیں۔دنیا میں آج تک اتنی تیز رفتاری سے اس طرح کے منصوبے پر کام نہیں ہوا جس طرح ساہیوال کول پاورپلانٹ پر ہو رہا ہے ۔ چینی کمپنیوں کے حکام نے منصوبے کو جلد سے جلد مکمل کرنے کی یقین دہانی کرائی۔دریں اثنا ء وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی زیرصدارت اعلی سطح کے اجلاس میں پنجاب میں لگائے جانیوالے 3600میگاواٹ کے گیس پاور منصوبوں کیلئے گیس کی سپلائی اورٹرمینل کی تعمیر کے امور پر پیشرفت کا بھی جائزہ لیاگیا۔وفاقی وزیر پانی و بجلی خواجہ محمد آصف،وفاقی وزیر پٹرولیم شاہدخاقان عباسی،وفاقی وزیر پورٹس اینڈ شپنگ میر حاصل خان بزنجو،وفاقی سیکرٹری پانی و بجلی،سیکرٹری وزیراعظم ،چےئرمین پورٹ قاسم اتھارٹی ،چےئرمین منصوبہ بندی وترقیات،سیکرٹری توانائی،چیف ایگزیکٹو آفیسرنیشنل پاورپارکس کمپنی لمٹیڈ، چیف ایگزیکٹو آفیسرقائداعظم تھرمل پاور لمٹیڈاور اعلی حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔وزیر اعلی شہبازشریف نے اجلا س سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی اور صوبائی حکومت ملکر پنجاب میں 3600 میگا واٹ کے گیس پاور پلانٹس لگارہی ہیں ۔ متعلقہ وفاقی و صوبائی محکموں کو گیس پاور پلانٹس کے منصوبوں کی مقررہ مدت میں تکمیل کیلئے مربوط انداز سے کام کرنا ہے اور توانائی بحران میں کمی لانے کے لئے یہ منصوبے انتہائی اہمیت کے حامل ہیں ۔ وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے وفاقی وزیرپانی و بجلی خواجہ محمد آصف نے ملاقات کی،جس میں توانائی منصوبوں پر پیش رفت کے حوالے سے بات چیت ہوئی۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ توانائی بحران سے نمٹنے کے لئے دن رات کی کاوشیں رنگ لا رہی ہیں اور پاکستان میں توانائی منصوبوں پر تیزرفتاری سے کام جاری ہے ۔انہوں نے کہا کہ 2017ء کے اختتام تک کئی ایک منصوبوں کی تکمیل سے ہزاروں میگاواٹ اضافی بجلی حاصل ہوگی اوروزیراعظم محمد نوازشریف کی قیادت میں لوڈ شیڈنگ کے خاتمے کا وعدہ پورا کریں گے۔ وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف نے پنجاب حکومت کی جانب سے چین کے قومی ادارہ توانائی کے نائب منتظم لی فزوگ، اور چینی وفد کے اعزاز میں عشائیہ دیا۔وزیر اعلی شہباز شریف نے عشائیہ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں چین کے قومی ادارہ توانائی کے نائب منتظم اور چینی وفد کا لاہور آمد پر دل کی اتھاہ گہرائیوں سے خیرمقدم کرتا ہوں ۔ اگر چہ یہ ان کا پہلا دورہ ہے لیکن آنے والے دنوں میں یہ اس طرح کے مزید کئی دورے کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ چین کے صدر اپریل 2015 ء میں پاکستان آئے اور چین کے صدر اور وزیر اعظم محمد نواز شریف نے اسلام آباد میں 46 ارب ڈالر مالیت کے 51 تاریخی معاہدوں پر دستخط کئے۔ یہ وہ موقع تھا جب پاکستان اور چین نے نئی تاریخ رقم کی جس سے دنیا دنگ اور حیران رہ گئی۔ ہمارے دوست اس عظیم موقع پر بے انتہاخوش تھے کیونکہ چین نے اتنی بڑی سرمایہ کاری کے یہ معاہدے پاکستان کی ترقی اور خوشحالی کیلئے کئے ۔ پاکستان کے عوام بھی بے انتہا خوش تھے اور پاک چین دوستی میں بلندیوں کی نئی تاریخ رقم ہوئی۔ 46 ارب ڈالر کی عظیم چینی سرمایہ کاری کا منفرد واقعہ نہ صرف ہوا بلکہ ایک عظیم جذبے اور محبت کی داستانیں رقم کرتے ہوئے آگے کی جانب بڑھ رہا ہے ۔وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی زیرصدارت اعلی سطح کا اجلاس منعقد ہوا،جس میں ساہیوال میں کول پاورپلانٹ کے منصوبے پر پیشرفت اور پراجیکٹ کیلئے کوئلے کی ترسیل کے اقدامات کا جائزہ لیا گیا۔وفاقی وزیر پانی و بجلی خواجہ محمد آصف،وفاقی وزیر پورٹس اینڈ شپنگ میر حاصل خان بزنجو، وفاقی سیکرٹری پانی و بجلی،سیکرٹری وزیراعظم ،چےئرمین پورٹ قاسم اتھارٹی،چےئرمین منصوبہ بندی وترقیات،چیف ایگزیکٹو آفیسر پاکستان ریلویز،ایم ڈی این ٹی ڈی سی ،چین کے ہیوانگ گروپ کے ایم ڈی ہو چن شنگMr. Wu ChunSheng ، ہیوانگ شین ڈؤنگ پاورجنریشن کمپنی کے نائب صدر، چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیوانگ شین ڈؤنگ رویائی اور متعلقہ وفاقی و صوبائی حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔وزیر اعلی شہباز شریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ساہیوال میں کول پاورپلانٹ کا منصوبہ انتہائی تیز رفتاری سے مکمل کیا جا رہا ہے اور 1320 میگاواٹ کا یہ منصوبہ دسمبر 2017 ء کی مقررہ مدت سے کہیں پہلے مکمل ہو گا ۔ انہوں نے کہا کہ چین سمیت دنیا کی تاریخ میں اتنے پیداواری گنجائش کے منصوبے پر ایسی تیز رفتاری سے کام کرنے کی مثال نہیں ملتی۔

مزید :

صفحہ اول -