پاک فوج کی گاڑی پر حملے میں شہری تعاون کرتے تو ملزم فرار نہیں ہو سکتے تھے: آئی جی سندھ

پاک فوج کی گاڑی پر حملے میں شہری تعاون کرتے تو ملزم فرار نہیں ہو سکتے تھے: آئی ...

کراچی ( اے این این )آئی جی سندھ اللہ ڈنو خواجہ نے کہا ہے کہ پاک فوج کی گاڑی پر حملے میں شہری تعاون کرتے تو ملزم فرار نہیں ہوسکتے تھے۔کراچی میں پریس کانفرنس کے دوران آئی جی سندھ نے کہا کہ پولیس شہر سے جرائم کے خاتمے کے لیے بھرپور کوششیں کررہی ہیں۔ صرف جولائی میں شہرکے مختلف علاقوں میں 490 پولیس مقابلے ہوئے ہیں اورہرروز3 سے 4 ملزمان کو رنگے ہاتھوں پکڑا جارہا ہے۔ پولیس کی کارروائیوں کی بدولت ہی شہر میں اسٹریٹ کرائم کی وارداتوں میں واضح کمی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امجد فرید صابری قتل کیس میں کافی پیش رفت ہوئی ہے لیکن ابھی اسے منظر عام پر نہیں لایا جاسکتا۔اے ڈی خواجہ کا کہنا تھا کہ اگرچند روزقبل پاک فوج کے اہلکاروں پرکئے گئے حملے میں عوام تعاون کرتے تو ملزم فرار نہیں ہوسکتے تھے۔ لائسنس والا اسلحہ گھر میں سجانے کے لیے نہیں ہوتا ، شہری اسے اپنے دفاع کے لیے استعمال کر سکتے ہیں، لوگوں کی حوصلہ افزائی کے لیے ناظم آباد میں 2 ڈاکوں کو مارنے والے کو 50 ہزار روپے انعام دے رہے ہیں۔

مزید : صفحہ آخر