آل شریف کی حکومت قائم رہی تو ناقابل اصلاح حالات جنم لیں گے، عامر کوریجہ

آل شریف کی حکومت قائم رہی تو ناقابل اصلاح حالات جنم لیں گے، عامر کوریجہ

  

مٹھن کوٹ (نامہ نگار)6اگست کو کراچی، لاہور، اسلام آباد سمیت پاکستان کے دس بڑے شہروں میں تحریک قصاص کا آغاز کررہے ہیں ۔ وفاقی مشاورتی اجلاس میں 25سیاسی جماعتوں کا منظورشدہ ڈکلیریشن عوام کی وہ آواز ہے جو وہ موجودہ کرپٹ اور ظالم حکومت آنے کے بعد اٹھارہے ہیں ۔ تحریک قصاص کے مظاہروں میں دیگر سیاسی پارٹیوں کو مدعو کیا ہے ۔ تحریک کی قیادت چاہتے ہیں نہ سیادت کا شوق ہے۔ ماڈل ٹاؤن کے سانحہ میں انصاف اور موجودہ قاتل حکمرانوں سے قوم کو نجات دلانا مقصود ہے ۔ آل شریف کی حکومت قائم رہی تو ایسے حالات پیدا ہوجائیں گے کہ جن کی اصلاح بھی ممکن نہ ہوگی۔ ان(بقیہ نمبر31صفحہ12پر )

(بقیہ نمبر1صفحہ12پر ) خیالات کا اظہار پی اے ٹی کے مرکزی ایڈیشنل سیکرٹری جنرل اور تحریک قصاص کے نائب سربراہ خواجہ محمد عامر فرید کوریجہ نے وفاقی مشاورتی اجلاس اور عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر محمد طاہر القادری سے خصوصی ملاقات کے بعد کوٹ مٹھن شریف پہنچنے پر فرید پیلس میں پرہجوم پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ 2014ء میں پاکستان عوامی تحریک نے جو دھرنا دیا اور اس کے کارکنوں نے حکومتی بربریت کا مقابلہ کرکے جس طرح پاکستان کی جنگ لڑی یہ آج اسی جدوجہد کا ثمر ہے کہ اپوزیشن کی25قومی سیاسی پارٹیوں نے حکومت پر عدم اعتماد کرتے ہوئے ایک مشترکہ اعلامیہ پر دستخط کیے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ شریف برادران نے ملک کو تباہی کی طرف دھکیل دیا ہے اور ان کی غیر سنجیدگی اور پالیسیوں کی وجہ سے پاکستان کے لوگ اس وقت انتہائی مشکلات کا شکار ہیں ۔ لوڈ شیڈنگ عروج پر ہے ، کسان اپنی فصلیں جلا رہے ہیں ، لاہور میں بچو ں اغوا ہورہے ہیں ، لوگ خود کشیوں اور خود سوزیوں پر مجبور ہیں ، غربت میں پسی ہوئی عوام کے پاس یوٹیلیٹی بلز ادا کرنے کی بھی حیثیت نہیں رہی۔ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے قاتل دندناتے پھر رہے ہیں ۔ ایک طرف بھارت کی پاکستان کے خلاف سازشیں عروج پر ہیں جبکہ دوسری طرف وزیر اعظم نواز شریف اور مودی کے یارانے عروج پر ہیں ۔ ان حالات میں یہ بات طے ہے کہ ان حکمرانوں کے ہوتے ہوئے پاکستان میں حالات کسی صورت بہتر نہیں ہوسکتے ۔ انہوں نے کہا کہ لاہور میں بچوں کے اغواء کی صورتحال پر سوشل میڈیا پر اشتہارات چلائے جارہے ہیں کہ مائیں بچوں کو باہر نہ نکلنے دیں ۔ انہوں نے کہا کہ میں وزیر اعلیٰ پنجاب سے پوچھتا ہو ں کہ گڈ گورننس کے دعوے دار وزیر اعلیٰ کے اپنے شہر کا عالم یہ ہے کہ لاہور کے شہری اغوا کے ڈر سے خوف میں مبتلا ہیں ۔ جبکہ حکمرانوں کو میٹرو بس اور اورنج ٹرین جیسے فضول منصوبوں سے فرصت نہیں ۔ عامر فرید کوریجہ نے مزیدکہا کہ وہ 6اگست کو پاکستان عوامی تحریک کی طرف سے لاہور کے مظاہرے میں شرکت کریں گے ۔ جبکہ عوامی تحریک کے سیکرٹری جنرل خرم نواز گنڈاپور کراچی کے مظاہرے میں شریک ہوں گے ۔

عامر کوریجہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -