پٹرولیم مصنوعات مہنگی، ہر شے کی قیمت میں اضافہ

پٹرولیم مصنوعات مہنگی، ہر شے کی قیمت میں اضافہ

  

حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کے نرخوں میں مجموعی طور پر نو روپے فی لیٹر اور ایل پی جی کی قیمت میں ایک روپے پچاس پیسے فی کلو اضافہ کر دیا، نئی قیمتوں کا اطلاق یکم اگست سے ہو چکا۔ پٹرول کی قیمت 3.86 روپے کے اضافے کے بعد اب 103.97 روپے  ہو گی ہائی سپیڈ ڈیزل نئی قیمت 106.46 روپے فی لیٹر مقرر کی گئی۔ لائٹ ڈیزل 86.62 روپے فی لیٹر ملے گا اور مٹی کا تیل 65.29 روپے فی لیٹر دستیاب ہوگا۔ بتایا گیا ہے کہ یہ اضافہ عالمی منڈی میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھنے اور روپے کی قدر میں کمی کے باعث کیا گیا آئندہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کا تعین پندرہ روزہ بنیاد پر کیا جائے گا۔ ہر ماہ کی یکم اور 15 تاریخ کو فیصلہ کیا جائے گا یہ فیصلہ قومی اقتصادی کونسل کے اجلاس میں کیا گیا تھا، جس کا اطلاق اسی ماہ سے ہوگا اور اب 15 اگست کو نئی قیمتوں کا اعلان ہوگا، یہ طے شدہ امر ہے کہ پٹرولیم مصنوعات کے بڑھتے ہوئے نرخ ہر شے پر اثر انداز ہوتے اور مہنگائی میں اضافے کا سبب بنتے ہیں۔ عید الاضحی کی وجہ سے سبزی، فروٹ اور مصالحہ جات میں منافع خوری ہو رہی تھی۔ جبکہ ٹرانسپورٹر حضرات نے پٹرولیم مصنوعات کے نرخوں میں کمی کا فائدہ عوام کو نہیں دیا تھا اور جب قیمت بڑھی تو کرایے مزید بڑھا دیئے تھے۔ اب جو نرخ مزید بڑھے ہیں تو یہ بوجھ براہ راست عوام پر آیا ہے جو پہلے ہی مہنگائی کی چکی میں پس رہے ہیں اب لوگ مزید زیر بار ہوں گے۔ارباب اقتدار جب اپوزیشن میں تھے تو بار بار پٹرولیم مصنوعات پر عائد شدہ تیکس کم کرنے کا مطالبہ کرتے تھے، اب ان کے ہاتھ میں اختیار ٓایا ہے تو انہیں اپنے ہی وعدوں اور دعوؤں کا کچھ پاس تو کر ہی لینا چاہیے۔

 

مزید :

رائے -اداریہ -