جام پور،بیٹے کے ہاتھوں ماں قتل، جھگڑا ختم کرانے  پر ایک شخص جاں بحق

         جام پور،بیٹے کے ہاتھوں ماں قتل، جھگڑا ختم کرانے  پر ایک شخص جاں بحق

  

 جام پور،ہارون آباد(نامہ نگار،نمائندگان پاکستان)موضع پول والا میں بدبخت  نو بہتا دولہابیٹے نے حقیقی ماں کو پستول کے فائر کرکے ابدی نیند سلا دیا۔ عید کی خوشی غمی میں تبدیل۔ تفصیل کے مطابق جام پو ر کے نواحی علاقہ  پول والا کے رہاشی عاشق حسین واڈو نے دو شادیاں کر رکھی تھیں۔ عاشق حسین نے اپنے بیٹے  سجاد حسین کی شادی ایک ہفتہ قبل اپنے سا لے فضل حسین(بقیہ نمبر38صفحہ6پر)

 کی بیٹی سے وٹہ سٹہ کی بنا کی تھی۔ اور اس کی وٹہ والی بہن کی شادی مورخہ نو اگست کو ہونی تھی۔ قاتل بدبخت بیٹے کی ماں اپنی بیٹی کاجہیز لینے کے لیے بازار گئی واپس آئی تو جہیز اور کپڑے دیکھ کرکے سجاد حسین بپھر گیا اور کہا کہ میں نے رقم سے ٹریکٹر اور دیگر اشیا ء خریدنی تھی اپ نے اتنا خرچ کر دیا جس پر ماں اور بیٹے کے درمیان تلغ کلامی ہوئی۔مبینہ اطلاعات کے مطابق بدبخت بیٹا اسلحہ لیے گھر کے صحن میں پھرتا رہا۔ ماں قتل سے بچنے کے لیے مدد کو پکارتی رہی تاہم سجاد نے پستول کے فائر کرکے اپنی اخرت کوخراب کرکے ہمیشہ کے لیے ختم کر دیاہے۔ قتل کرنے کے ملزم بھاگ گیا۔ اطلاع ملتے ہی ڈی ایس پی چوہدری فیاض الحق خان ایس ایچ او ذبیر احمد خان بزدار  موقع پر پہنچ گئے۔۔ قاتل سجاد احمد   والدین کا اکلوتا بیٹا ہے  چھ بہنیں ہیں۔  بہن کی شادی نواگست کو ہونی تھی۔  دوسری طرف پولیس نے متقولہ کے بھائی کی مدعیت میں رشتہ دینے کی رنجش کی بنا پر مقدمہ درج کر لیا۔  مبینہ طور پر ملنے والی معلومات کے مطابق قاتل سجاد حسین کواپنی ماں کے کردار پر شک کے علاوہ پرانی دشمنی بدلہ لینے کا منصوبہ تھا۔ایس ایچ او نے رابطہ پر بتایا کہ ملزم کی گرفتاری کے لیے دن رات چھاپے مارے جارہے ہیں جلد وہ قانون کی گرفت میں ہو گا۔ نواحی گاؤں 26تھری آر میں مبینہ طور پر ہمسایوں اور ان کے داماد کے مابین جھگڑا ختم کراتے ہوئے جان محمد نامی شخص لقمہ اجل بن گیا۔ وقوعہ کی اطلاع ملنے پر پولیس موقع پر پہنچ گئی ہارون آباد کے نواحی گاؤں 26تھری آر کے رہائشی جان محمد نامی شخص کے ہمسائے یونس کا داماد امجد نامی شخص میاں چنوں سے اپنی بیوی کو لینے آیا ہوا تھا۔یونس اور اس کے داماد امجد کے درمیان کسی بات پر جھگڑا ہو گیا تو جان بچانے کی خاطر امجد بھاگ کر جان محمد کے گھر پناہ لینے کی خاطر داخل ہو گیا جس پر یونس وغیرہ نے جان محمد کو کہا کہ ان کے داماد کو باہر نکال دو۔ معاملہ کی نزاکت کو دیکھتے ہوئے مقتول جان محمد نے ان کر درمیان صلح کی کوشش کی تو ملزمان یونس وغیرہ نے اسی پر حملہ کر دیا جس کے نتیجہ میں جان محمد جاں بحق ہو گیا۔ وقوعہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس تھانہ صدر نے موقع پر پہنچ کر لاش کو پوسٹ مارٹم کے لئے تحصیل ہیڈ کواٹر ہسپتال منتقل کر کے قانونی کاروائی کا آغاز کر دیا ہے۔

جاں بحق

مزید :

ملتان صفحہ آخر -