5اگست، بھارتی جارحیت،مظالم کیخلاف ملک گیر احتجاج کی تیاریاں 

  5اگست، بھارتی جارحیت،مظالم کیخلاف ملک گیر احتجاج کی تیاریاں 

  

 ملتان، لودھراں، راجن پور، وہاڑی، لیہ (سپیشل رپورٹر، نمائندگان پاکستان) حکومت پاکستان نے بھارت کے مقبوضہ کشمیر پر غاصبانہ قبضے کے خلاف 5اگست کو کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کا دن منانے کے احکامات جاری کردیئے ہیں  ۔ اس ضمن میں  پنجاب حکومت نے ملتان سمیت صوبہ بھر کے ڈپٹی کمشنرز، چیف آفیسر میٹرو پولیٹن کارپوریشن، میونسپل کارپوریشن، تحصیل (بقیہ نمبر2صفحہ6پر)

کونسل او رمیونسپل کمیٹیز کو ہنگامی بنیادوں  پر انتظامات مکمل کرنے کے احکاما ت جاری کردیئے ہیں  ۔ بھارت کاکشمیر پر 5اگست کو غاصبانہ قبضہ کو ایک سال مکمل ہو رہا ہے، بھارت کے غاصبانہ قبضے کے ملتان سمیت پاکستان بھر میں  5اگست کو کشمیریوں  سے اظہار یکجہتی کا دن منایا جارہا ہے، اس ضمن میں  تمام ڈپٹی کمشنرز کو ہدایت کی گئی ہیں  کہ ہر ضلع میں  ایک کلومیٹر لمبی واک کا انتظام کیا جائے جس میں  ایم این ایز اور ایم پی ایز کو شامل کیا جائے، واک کے آغاز پوائنٹ کا نام مظفر آباد اور اختتام سری نگر رکھا جائے، واک کے شرکا بازوں  پر سیاہ پٹیاں باندھیں گے، ملتان سمیت پاکستان بھر میں قومی ترانہ بجایا جائے گا اور ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی جائے گی، کشمیریوں  کی آزادی سے متعلق ریلوے اسٹیشن، ائیر پورٹس، نیشنل ہائی ویز سمیت دیگر اہم مقامات پر بینرز اور بل بورڈز آویزاں کئے جائیں جبکہ الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا پر بھی کشمیریوں  سے اظہار یکجہتی کیلئے پروگرام چلائے جائیں۔  حکومت پنجاب کی ہدایت پر 5 اگست 2020 لودھراں میں یوم استحصال کشمیر کیطور پر منایا جائے گا۔ یوم استحصال کشمیر منانے کے حوالے سیڈپٹی کمشنر عمران قریشی کی زیر صدارت ایک اجلاس آج یہاں ان کے دفتر میں منعقد ہوا۔اجلاس میں کشمیری بھائیوں سے اظہار یکجہتی اور بھارتی فوج کے مقبوضہ کشمیر پرغاصبانہ قبضہ کے خلاف ملک گیر احتجاج میں حصہ  لینے کااصولی فیصلہ کیا گیا ہے۔اس موقع پر ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر لودھراں سید کرار حسین، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو سید محمد عباس شاہ، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل ملک مشتاق حسین نائچ، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر فنانس اینڈ پلاننگ فاروق قمر،تحصیل دنیاپور کے اسسٹنٹ کمشنر سید وسیم حسن،اسسٹنٹ کمشنر کہروڑ پکا احمد فراز اعوان اور دیگر متعلقہ محکموں کے سربراہان شریک تھے۔اجلاس سے خطاب میں ڈپٹی کمشنر عمران قریشی نے کہا کہ5 اگست کو مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کے غاصبانہ محاصرہ کو ایک سال مکمل ہونے پر کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کا دن قومی جذبہ سے منایا جائے گا۔کشمیری بھائیوں سے اظہار یکجہتی کے لیے لودھراں میں علامتی احتجاجی واک کا انعقادکیا جائے گا۔جس کا آغاز5اگست کو دن 11 بجیدفتر ریسکیو ایمرجنسی 1122سے ہو گا جو کانجو حال پر اختتام پذیر ہوگی بعدازاں سماجی فاصلہ کے اصول کو مدنظر رکھتے ہوئے کشمیریوں کے حق خود ارادیت کے لیے آواز بلند  کرنے کے لئے ایک خصوصی سیمینار کا انعقاد بھی کیا جائے گا۔احتجاجی واک اور سیمینار میں شرکت کرنے والے تمام افراد کو کرونا ایس او پیز پر عملدرآمد کی ہدایت کی گئی ہے۔اس حوالہ سے منعقدہ تقریبات میں منتخب قومی و صوبائی اسمبلی کے اراکین، تمام شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی علی سرکار شخصیات شرکت کریں گی۔واک میں شریک ہونے والے افرادکالی پٹیاں، کالے ماسک، کالی ٹوپیاں پہن کر اپنا احتجاج ریکارڈ کروائیں گے۔ تقریب میں قومی پرچم اور کشمیر کے جھنڈے لہرائے جائیں گیاور کشمیر کے ملی نغمے اور آزادی کے نغمے گائے جائیں گے۔ضلع بھر میں یوم استحصال کشمیرکو قومی جوش و جذبے سے منانے کے لیے بھرپور تیاریوں کا آغاز کر دیا گیا ہے۔حکومت پنجاب کی ہدایات پر ملک کے دیگر حصوں کی طرح ضلع راجن پور میں بھی بھارت کے جموں و کشمیر پر فوجی محاصرہ کا ایک سال مکمل ہونے پر 5اگست 2020 کو یوم یکجہتی کشمیر کو یوم استحصال کشمیر منانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ مقبوضہ جموں و کشمیر پر بھارتی فوجی جارحیت کو بے نقاب کرنے کی کوششیں کشمیریوں کی آزادی تک جاری رکھی جائیں گی اور بھارت کا مکروہ چہرہ دنیا کو دکھانے کے لیے ہر پلیٹ فارم پر احتجاج ریکارڈ کرایا جائے گا۔ یہ باتیں ڈپٹی کمشنر راجن پور ذوالفقارعلی نے یوم استحصال کشمیر کے انتظامات کے حوالے سے منعقدہ اجلاس سے خطاب کے دوران کہیں۔ اس موقع پر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو ظہور حسین بھٹہ، اسسٹنٹ کمشنر راجن پور اورنگزیب سدھو کے علاوہ ضلع بھر کے محکموں کے سربراہان نے شرکت کی۔ ڈپٹی کمشنر نے مزید کہا کہ کشمیری عوام سے اظہار یکجہتی کے حوالے سے شہر میں بینرز لگائے جائیں گے اور کارونا سے بچاؤ کی حفاظتی تدابیر اختیار کرتے ہوئے ریلی نکالی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہم بھارت کو دکھانا چاہتے ہیں کہ ہم سب پاکستانی کشمیری بھائیوں کے ساتھ ہیں۔ ریلی کے دوران پاکستانی اور کشمیری ترانے بجائے جائیں گے، پاکستانی و کشمیری پرچم لہرائے جائیں گے، ایک منٹ کی خاموشی اختیار کر کے تمام قسم کی ٹریفک روک دی جائے گی۔ ریلی میں سیاسی قیادت، سول سوسائٹی، انجمن تاجران، میڈیا، علمائے کرام اور دیگر مکاتب فکر کے لوگ شریک ہوں گے۔ ڈپٹی کمشنر وہاڑی کیپٹن (ر) وقاص رشید نے کہا ہے کہ حکومت کی ہدایت کے مطابق 5اگست کو یوم استحصال کشمیر کے طور پر منایا جائے گا بھارتی افواج نے مقبوضہ جموں و کشمیر پر ایک سال سے غاصبانہ محاصرہ کر رکھا ہے جس سے مقبوضہ جموں و کشمیر کی آزادی سلب ہو چکی ہے بھارتی افواج کے مظالم اور کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے تحصیل کونسل وہاڑی سے وی چوک تک واک کا اہتمام کیا گیا ہے جس میں کورونا ایس او پیز کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے تمام شعبہ زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد شرکت کریں گے واک کے آغاز سے قبل 10بجے صبح سائرن بجائے جائیں گے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی جائے گی پاکستان اور آزاد جموں و کشمیر کے ترانے بھی بجائیں گے واک کے موقع پر بھارتی مظالم کے خلاف اور کشمیر سے اظہار یکجہتی کیلئے بینرز اور پوسٹرز بھی آویزاں کئے جائیں گے اور دنیا کو بتایا جائے گا کہ کشمیری عوام تنہا نہیں ان کیساتھ پور ی پاکستانی قوم کھڑی ہے انہوں نے ان خیالا ت کا اظہار اپنے آفس میں یوم استحصال کشمیر کے انتظامات کے حوالے سے ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا ضلعی انتظامیہ لیہ کی جانب سے پنجاب حکومت کی ہدایت پرمقبوضہ کشمیر پر بھارتی فوج کے غاصبانہ محاصرہ کے خلاف 5اگست کو کشمیری عوام کے ساتھ یکجہتی کا دن منایاجائے گا۔اس سلسلہ میں 11بجے دن فوارہ چوک سے ٹی ڈی اے چوک تک واک کی جائے گی جس میں کورونا ایس اوپیز پر عمل درآمد کیاجائے گا۔واک میں ممبران اسمبلی،ضلعی افسران ا ورملازمین،مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد شرکت کریں گے۔واک میں کشمیراور پاکستا ن جھنڈے لہرائے جائیں گے۔سڑکوں پر ٹریفک روک کر ایک منٹ خاموشی اختیار کی جائے اور کشمیراور پاکستا ن کے ترانے بجائے جائیں گے۔ واک منانے کے سلسلہ میں انتظامیہ نے تیاریوں کا آغاز کردیاہے۔

تیاریاں 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -