غلط انجکشن لگنے سے بچی جاں بحق‘ انکوائری ٹھپ‘ ورثا کا احتجاج 

 غلط انجکشن لگنے سے بچی جاں بحق‘ انکوائری ٹھپ‘ ورثا کا احتجاج 

  

کہروڑ پکا (نما ئندہ خصو صی) تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں گزشتہ دنوں محلہ را جپو تاں سے 13سا لہ بچی مہرین کو لا یا گیا تھا جس کے پیٹ میں درد تھا ہسپتال میں صرف ایک ٹرینر ڈسپنسرلڑ کا تیمورمو جود تھا جس نے خود کو ڈیوٹی ڈا کٹر ظا ہرکر تے ہو ئے نہ صرف انجکشن لگا یا بلکہ میڈیکل سٹور کی دوا ئی بھی لکھ کر دی اور کہا کہ بچی ٹھیک ہو جا ئے گی گھر لے جاو میڈیکل سٹور سے دوا ئی لی(بقیہ نمبر4صفحہ6پر)

 اور بچی کو گھر لے گئے جہاں پر جا کر بچی نے تڑپنا شروع کر دیا بچی کو دو بارہ ہسپتال لا یا گیا مگر وہ راستے میں ہی دم توڑ گئی تھی ہسپتال میں جب بچی کو لا یا گیا تو پھرایمر جنسی میں اے سی کے  سا منے مر یضوں کے بیڈ پر سو یا ہوا ڈاکٹر یحییٰ کو جگا یا گیا جس نے آ کر مر یضہ کو چیک کیا بعد میں لیڈی ڈا کٹر سفیراء کو جگا کر لا یا گیا اس نے چیک کیا اور کہا کہ مر یضہ دم توڑ گئی ہے 15پر کال کر کے پو لیس کو بلوا یا گیا پو لیس نے آ کر بھی کچھ نہ کیا الٹا عملہ ڈرا نے لگا کہ قا نونی کا روا ئی کرو گے تو بچی کا پو سٹ ماٹم کروا نا پڑے گا  نعش خراب ہو گی اور بغیر کسی کا روا ئی کے نعش دے کر گھر بھیج دیا اور جہاں پر 13سالہ مہرین کونمازے جنازہ کے بعد سپرد خاک کر دیا گیا اہل علا قہ نے ڈا کٹروں کی بے حسی پر شدید احتجاج کیا اور ڈی سی لو دھراں سے کا روا ئی کا مطا لبہ کیا ایم ایس نے انکوا ئری کمیٹی بنا دی مگر اس نے بھی کو ئی کا روا ئی نہ کی لیڈی ڈا کٹر نے اپنی غفلت کو چھپا نے کے لیے مبینہ طور پربعد میں نہ صرف مہرین کی انٹری ڈا لی بلکہ دوا ئی بھی تجویز کر کے لکھ دی اور اپنے موقف میں کہا کہ اس نے دوا ئی تجویز کر کے دی تھی جو ڈسپنسرٹرینری نے لگا ئی ہے   

احتجاج

مزید :

ملتان صفحہ آخر -