سندھ کے ہزاروں اساتذہ تنخواہوں کیلئے احتجاج پر تیار 

سندھ کے ہزاروں اساتذہ تنخواہوں کیلئے احتجاج پر تیار 

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)گورنمنٹ سکینڈری ٹیچرز ایسوسی ایشن(گسٹا) سندھ مہیسر کی قیادت میں کراچی پریس کلب پر ہونیوالے متوقع احتجاج اور دھرنے میں سندھ کے 5اضلاع کے ادر کیڈر اساتذہ شریک ہونے کی یقین دہانی کرادی ہے۔ اساتذہ رہنماؤں کا کہنا تھا کہ سال2012میں بھرتیوں کے بعد 9سال گذر جانے کے باوجود سندھ سرکار نے تنخواہیں جاری نہیں جس کی وجہ سے ان کے گھروں میں فاقوں کی نوبت آ پہنچی ہے اور وہ کسمپرسی کی زندگی گذارنے پر مجبور ہیں، اساتذہ رہنماؤں کا کہنا تھا کہ وہ گسٹا مہیسر کے مرکزی صدر مقصود احمد مہیسر کی ہدایت کا انتظار کر رہے ہیں اشارہ ملتے ہزاروں اساتذہ سڑکوں پر آجائیں گے۔کراچی میں ٹیچرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین ظہیر احمد پہلے ہی گسٹا مہیسر کے احتجاج کی حمایت کر چکے ہیں۔ ضلع خیر پور میں ادر کیڈر اساتذہ تنظیم کے صدر شوکت منگی،ضلع گھوٹکی کے صدر سدھیر احمد،ضلع نوشہرو فیروز کے صدر مدثر سہتو،ضلع سانگھڑ کے صدر محمدعثمان انٹر اور ضلع سکھر کے صدر زبیر احمد سندھی نے گورنمنٹ سکینڈری ٹیچرز ایسوسی ایشن سندھ (گسٹا مہیسر)کی قیادت کو یقین دہانی کرا تے ہوئے کہا ہے کہ9سال سے تنخواہوں سے محروم اساتذہ کے حقوق کیلئے جو بھی ہمارا ساتھ دیگا ہم بھی اسکے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے رہیں گے۔پیپلز پارٹی کے دور حکومت میں سال2012کے دوران سندھ کے ضلع گھوٹکی میں 222،ضلع نوشہرو فیروز 128،ضلع خیر پور 314،ضلع سانگھڑ 89اور ضلع سکھر میں 69مختلف کیڈر کے اساتذہ بھرتی کئے گئے تھے جن میں سندھی لینگویج ٹیچرز،ڈرائنگ ٹیچرز،اورینٹل ٹیچرز،عربک ٹیچرز اور دیگر کیڈر کے اساتذہ شامل تھے۔ضلع سکھر کے صدر زبیر احمد سندھی نے کہا کہ سال2012ء کے ادر کیڈراساتذہ کی تنخواہوں کیلئے جو بھی بات کرے گا ہم اس کے ساتھ دینگے

مزید :

صفحہ آخر -