’’کیا وزیراعظم عمران خان جانوروں کی ہلاکت کے ذمہ دار ہیں؟‘‘اسلام آباد ہائیکورٹ نے جانوروں کی ہلاکت سے متعلق کیس میں بڑا حکم جاری کر دیا 

’’کیا وزیراعظم عمران خان جانوروں کی ہلاکت کے ذمہ دار ہیں؟‘‘اسلام آباد ...
’’کیا وزیراعظم عمران خان جانوروں کی ہلاکت کے ذمہ دار ہیں؟‘‘اسلام آباد ہائیکورٹ نے جانوروں کی ہلاکت سے متعلق کیس میں بڑا حکم جاری کر دیا 

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )اسلام آباد ہائیکورٹ نے جانوروں کی ہلاکت پر قانون کے مطابق کارروائی کا حکم جاری کر دیاہے اور 11اگست تک رپورٹ طلب کر لی ہے ۔

اسلام آباد ہائیکورٹ میں چڑیاگھرمیں جانوروں کی ہلاکت کیس کی سماعت ہوئی جس دوران عدالت نے کہا کہ وائلڈلائف بورڈممبران جانوروں کی ہلاکت کے ذمہ دارہیں، وائلڈلائف میں وزیرماحولیاتی تبدیلی،چیئرمین سی ڈی اے شامل ہیں۔عدالت کا کہناتھا کہ اگرجانوروں کےساتھ یہ سلوک ہواتوانسانوں سے کیاسلوک ہوتاہے؟ جولوگ جانوروں کی ہلاکت کے ذمہ دارہیں وہی تحقیقات کررہے ہیں،عدالت وفاقی کابینہ نے مشیر،معاون خصوصی،وزیرسب کوبورڈممبربنایا۔

 اسلام آباد ہائیکورٹ نے جانوروں کی ہلاکت کے پر قانون کے مطابق کارروائی کا حکم جاری کر دیاہے ، ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت میں بتایا کہ جانوروں کی ہلاکت پرنامعلوم افرادکیخلاف مقدمہ درج ہوچکا۔ عدالت نے استفسار کیا کہ نامعلوم افرادکیوں؟ایف آئی آر بورڈ ممبران کیخلاف ہونی چاہیے ۔

چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ اطہر من اللہ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ چڑیاگھرمیں جانوروں کی ہلاکت افسوسناک ہے۔ سیکریٹری نے عدالت میں بتایا کہ وزیر موسمیاتی تبدیلی،وائلڈلائف بورڈممبرکانیانوٹیفکیشن نہیں ہواتھا۔عدالت نے کہا کہ وائلڈلائف بورڈممبران کاپرانانوٹیفکیشن دیکھیں تووزیرانچارج ذمہ دارہے۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ وزارت موسمیاتی تبدیلی کاوزیرانچارج کون تھا؟سیکریٹری موسمیاتی تبدیلی نے عدالت میں بتایا کہ موسمیاتی تبدیلی کے انچارج وزیرعمران خان تھے،عدالت نے استفسار کیا کہ کیاوزیراعظم عمران خان جانوروں کی ہلاکت کے ذمہ دارہیں؟۔

مزید :

قومی -