نشے میں آدمی نے ہسپتال سے ڈاکٹر کے کپڑے رین کوٹ سمجھ کر چرا لیے، لیکن اس کا نتیجہ کیا نکلا؟ جان کر کوئی غلطی سے بھی ایسی حرکت نہ کرے

نشے میں آدمی نے ہسپتال سے ڈاکٹر کے کپڑے رین کوٹ سمجھ کر چرا لیے، لیکن اس کا ...
نشے میں آدمی نے ہسپتال سے ڈاکٹر کے کپڑے رین کوٹ سمجھ کر چرا لیے، لیکن اس کا نتیجہ کیا نکلا؟ جان کر کوئی غلطی سے بھی ایسی حرکت نہ کرے

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں شراب کے نشے میں دھت ایک شخص نے ہسپتال سے ڈاکٹروں کا کورونا وائرس سے بچاﺅ کا حفاظتی سوٹ (پی پی ای)برساتی سمجھ کر چوری کر لیا اور کورونا وائرس کا شکار ہو گیا۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق یہ واقعہ ناگ پور میں پیش آیا ہے۔یہ شخص سبزی فروش تھا اور واقعے کی رات تیز بارش ہوئی اور یہ حادثاتی طور پر ایک نالے میں گر کر زخمی ہو گیا۔ اسے زخمی حالت میں ناگ پور کے میو ہسپتال لایا گیا۔

رپورٹ کے مطابق اس وقت اس نے شراب بھی پی رکھی تھی۔ اس کے زخموں پر مرہم پٹی کی گئی۔ اسی دوران اس کی نظر ڈاکٹروں کے حفاظتی لباس پر پڑ گئی اور اس نے اسے برساتی کوٹ سمجھ کر چوری کر لیا اور ہسپتال سے نکل گیا۔اس حفاظتی لباس کو پہننے سے اس شخص کو کورونا وائرس لاحق ہو گیا۔ رپورٹ کے مطابق حفاظتی لباس چوری کرکے جب یہ گھر واپس گیا تو اس نے اگلے روز اپنے ایک دوست کو بتایا کہ اس نے یہ برساتی کوٹ 1ہزار روپے میں خریدا ہے۔ تاہم اس کے دوست اور دیگر لوگوں کو پتا چل گیا کہ یہ برساتی کوٹ نہیں بلکہ ڈاکٹروں کا حفاظتی لباس ہے۔ انہوں نے محکمہ صحت کو اطلاع دے دی۔ جنہوں نے اس سے حفاظتی لباس لے کر جلا دیا اور اس شخص کا سیمپل لے کر کورونا ٹیسٹنگ کے لیے بھیج دیا۔ اگلے روز ٹیسٹ کا نتیجہ آیا تو پتا چلا کہ اس شخص کو کورونا وائرس لاحق ہو چکا تھا۔ وائرس کی تشخیص ہونے کے بعد اسے قرنطینہ سنٹر منتقل کر دیا گیا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -