کاروبار کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرکے ترقی کی جاسکتی ہے: ایم آئی رامے

کاروبار کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرکے ترقی کی جاسکتی ہے: ایم آئی رامے

اسلام آباد (اے پی پی) الخیر یونیورسٹی (آزادکشمیر) بھمبر کے مین کیمپس میں ڈین فیکلٹی آف بزنس مینجمنٹ ڈاکٹر ایم آئی رامے نے آرگنائزیشن کے جدید تقاضوں کے پس منظر میں لیکچر دےتے ہوئے طلبہ کو بتایا کہ بزنس کے جدید دور کے تقاضوں میں کثیر الجہات، ورک فورس کو بروئے کار لا کر تیزی سے ترقی کے زےنے طے کےے جا سکتے ہیں۔ انہوں نے بزنس میں صنفی تقسیم، تشدد اور صنفی سطح پر روا پرکھی جانے والی تفریق کے مختلف گوشوں کو وا کیاا۔ انہوں نے شعبہ جاتی ہم آہنگی کو کسی بھی میدان کیلئے انتہائی ضروری قرار دےتے ہوئے کہا کہ صدیوں سے چلنے والی بزنس کی صورتحال کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ بناکے ترقی کی جاسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بزنس کو اپ ڈیٹ کرکے رکھنا ضروری ہے۔ ڈاکٹر رامے نے کہا کہ ایک فردِ واحد میں پوشیدہ صلاحیتوں کو سامنے لانا ضروری ہے۔ اس سے ادارے کی کارکردگی میں کئی گنا اضافہ ہوسکتا ہے اور وہ ادارہ سُرعت کے ساتھ آگے بڑھتا ہے۔ ڈاکٹر رامے نے کارکنان کے تجربوں ،ان کی مہارت ،زبان کے اختلاف، ثقافتی بعد اور اسی نوعیت کے دیگر عوامل کو مثالوں سے واضح کرتے ہوئے طلبہ کو سمجھایا کہ بزنس کے اداروں میں انسانی وسائل کو زنگ آلود ہونے سے بچانا چاہئے ۔

اور ملٹی نیشنل سوچ کو بزنس کے معاملات کا حصہ بنانا چاہئے۔ لیکچر کے آخر میں سوال و جواب کے سیشن میں طلبہ نے بھر پور دلچسپی لی۔

مزید : کامرس


loading...