بارہمولہ میں 2 نوجوانوں کی کالے قانون کے تحت گرفتاری کی شدید مذمت

بارہمولہ میں 2 نوجوانوں کی کالے قانون کے تحت گرفتاری کی شدید مذمت

سرینگر(اے پی پی) مقبوضہ کشمیرمیں کل جماعتی حریت کانفرنس نے بارہمولہ میں کشمیری نوجوانوں کی گرفتاریوں اور ان پر بدنام ِزمانہ کالاقانون پبلک سیفٹی ایکٹ لاگو کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے نوجوانوں کے خلاف انتقام کارروائی قراردیا ہے ۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق حریت کانفرنس کے ترجمان نے سرینگر میں جاری ایک بیان میںکہاکہ اگرچہ پر امن مظاہرین پر طاقت کا وحشیانہ استعمال بھارتی فوجیوں کا روز کا معمول بن چکا ہے تاہم بارہمولہ کے دونوجوانوں کی کالے قانون کے تحت گرفتاری انتقامی کاروائی ہے۔انہوںنے کہا کہ نوجوانوں کو گرفتار کر ے ان کے تعلیمی مستقبل کو تاریک کیا جارہا ہے اور اس سلسلے میںغےر جمہوری اور غیر انسانی ہتھکنڈے استعمال کئے جارہے ہیں ۔انہوںنے انتظامیہ کی طرف سے دونوں نوجوانوں پر کالے قانون کے نفاذ کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کی کارروائیوں سے مقبوضہ علاقے کی صورتحال مزید خراب ہوگی ۔ ترجمان نے سوپور قصبہ میں گذشتہ دنوں آتشزدگی سے کئی رہائشی مکانوں کے جل کے خاکستر ہونے پر شدےد دکھ اور افسوس ظاہر کرتے ہوئے متاثرہ خاندانوں کے ساتھ یکجہتی اور ہمدردی کا اظہار کیا ہے ۔

مزید : عالمی منظر


loading...