یوتھ روزگار سکیم فارم بلیک میں فروخت ہونے پر تقسیم کرنے سے روک دیا گیا

یوتھ روزگار سکیم فارم بلیک میں فروخت ہونے پر تقسیم کرنے سے روک دیا گیا

لاہور(عامر بٹ سے)حکومت کی جانب سے بیروزگاری کے خاتمہ کیلئے ابتدائی طور پر کیے جانے والے اقدام یوتھ روزگار سکیم کے تحت تقسیم کیے جانے والے فارم کی بلیک میں فروخت،کا انکشاف ہونے پر وزیر اعظم میاں محمدنواز شریف نے سختی سے روٹس لے لیا گیا ۔نیشنل بینکوں کی تمام برانچوں کو 5دسمبر تک فارم کی تقسیم کرنے سے روک دیا گیا ہے۔انتہائی باوثوق ذرائع کے مطابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف سے یوتھ روزگار سکیم کے تحت نیشنل بینکوں کے ذریعے بیروزگاروں میں فارم تقسیم کرنے کا سلسلہ شروع کروا رکھا تھا جو کہ حکومت کی جانب سے بالکل مفت تقسیم کرنے کے احکامات تھے تاہم فارم کی بندش کے باعث حکومت کی جانب سے جاری کردہ فارم کی بعدازاں بلیک میں فروخت شروع ہو گئی اور ایک ایک فارم,3ہزار روپے تک فروخت کیے جانے کی اطلاعات موصول ہوئیں ہیں جس کا علم ہونے پر وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے نیشنل بینکوں کی تمام برانچوں کو فارم کی تقسیم سے روک دیا ہے۔وزیر اعظم ہاﺅس ذرائع کے مطابق یوتھ روزگار سکیم کے تحت جاری کردہ فارم کا پانچ دسمبر کو باقاعدہ وزیر اعظم وزیر اعلیٰ ہاﺅسں میں اعلان کرینگے اور 7دسمبر کو نوجوانوں میں یہ فارم نیشنل بینک کے ذریعے بالکل مفت تقسیم کیے جائینگے جو کہ نیشنل بینک کی مخصوص برانچوں پر دستیاب ہو گا۔جبکہ فارم جمع کروانے والے نوجوانوں کی تعلیمی قابلیت اور کاروبار کی نوعیت کے حوالے سے باقاعدہ ایک کمیٹی تشکیل دیدی ہے جس میں ڈی سی اوز ،ٹاﺅن انتظامیہ اور ارکان اسمبلی سمیت ہر صوبے کا ایک افسر ممبر کے طور پر فارم جمع کروانے والے بیروزگاروں کی باقاعدہ تصدیق کرینگے۔مزید معلوم ہوا ہے کہ فارم جمع کرواتے وقت کسی گزٹڈ آفیسر کی تصدیق بھی ضروری قرار دیدی گئی ہے۔زیادہ تر قرضے آئی ٹی کے شعبہ میں مہارت رکھنے والے تعلیم یافتہ نوجوانوں کو دیے جائینگے ۔قرضہ حاصل کرنے والے امیدوار کا بیروزگار ہونا ضروری ہو گا۔

فارم بلیک

مزید : صفحہ آخر


loading...