یو نیورسٹی ہنگامہ کیس،8ملزموں کی ضمانت منظور،ایک ریمانڈپر پولیس کے حوالے

یو نیورسٹی ہنگامہ کیس،8ملزموں کی ضمانت منظور،ایک ریمانڈپر پولیس کے حوالے

لاہور(نامہ نگار)پنجاب یونیورسٹی میں ہنگامہ آرائی، فائرنگ، اوراساتذہ کو حبس بے جا میں رکھنے کے کیس میںملوث13ملزمان (طلبا) کو پولیس کی جانب سے گزشتہ روزماڈل ٹاﺅن کچہری میں جوڈیشل مجسٹریٹ غلام مصطفی چودھری کی عدالت میں پیش کردیا گیا۔اس موقع پر پولیس کی بھاری نفری بھی موجود تھی جنہوں نے احاطہ عدالت کو گھیرے میں لے رکھا تھا ۔پولیس کی جانب سے فاضل عدالت میں ملزمان کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی گئی ۔فاضل عدالت نے 8ملزمان حافظ عابد، عثمان ،طارق، فاروق خان، اکرم وغیرہ کی 30،30ہزار روپے کے مچلکوں کے عوض ضمانتیں منظور کرلیں جبکہ ایک ملزم عبدالقدیر کو 2روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کی تحویل میں دینے کا حکم دیتے ہوئے دیگر4طلبا کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بجھوا دیا ہے۔واضح رہے کہ دہشت گردی کی دفعہ 7-ATAدرج ہونے کی وجہ سے مذکورہ ملزمان (طلبا)کوپہلے انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت میں پیش کیا گیا ،جہاں پر فاضل جج نے ریمارکس دیے کہ مذکورہ کیس میں دہشت گردی کی دفعہ نہیں بنتی ہے لہذا انہیں مقامی جوڈیشنل مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا جائے جس کے بعدپولیس کی جانب سے ملزمان کو مقامی عدالت میں پیش کردیا گیا۔ یاد رہے کہ مذکورہ ملزمان سمیت دیگر کے خلا ف 30ستمبر2013کوپنجاب یونیورسٹی لاءکالج میں ہنگامہ آرائی ،اساتذہ پر تشدد اور حبس بے جا میں رکھنے پر تھانہ مسلم ٹاﺅن پولیس نے پروفیسر نعیم اللہ خان کی مدعیت میں دہشت گردی ایکٹ 7-ATAسمیت دیگر سنگین دفعات 337/148/149/427/506/342/186کے تحت 4نامزد ملزمان ملک مبشر ،ماجد ،ابوزرغفاری وغیرہ سمیت دیگرمتعدد کے خلاف مقدمہ درج کررکھا ہے تاہم اسی وجہ سے گزشتہ 4روز سے مقامی یونیورسٹی کے طلبا کی جانب سے سٹرکیں بلاک کرکے احتجاجی مظاہرے کئے جارہے ہیں جس کی وجہ سے پولیس نے متعدد طلباکو بھی گرفتاررکھا ہے۔

یو نیورسٹی ہنگامہ کیس

مزید : صفحہ آخر


loading...