امریکہ نے افغانستان سے فوجی سامان کی منتقلی روک دی

امریکہ نے افغانستان سے فوجی سامان کی منتقلی روک دی
امریکہ نے افغانستان سے فوجی سامان کی منتقلی روک دی

  


واشنگٹن(آن لائن) امریکہ نے پاکستان میں احتجاج کے باعث افغانستان سے فوجی سامان کی منتقلی روک دی ہے۔ امریکی محکمہ دفاع پینٹاگون کے ترجمان مارک رائٹ نے واشنگٹن میں پریس بریفنگ کے دوران کہا کہ پاکستان میں احتجاج کے باعث افغانستان سے فوجی سامان کی منتقلی عارضی طور پر روک دی گئی ہے۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ افغانستان سے فوجی سامان کی واپسی ڈرائیوروں کی حفاظت اور خیبر پختونخوا میں میزائل حملوں کے خلاف احتجاج کے سبب کیا گیا کیونکہ احتجاج کی وجہ سے پاکستانی روٹ پر نیٹو سپلائی کو خطرات لاحق ہیں۔ سپلائی سے وابستہ افراد کی حفاظت کے پیش نظر سامان کی منتقلی عارضی طور پر روکی گئی ہے اور ا±مید ہے کہ پاکستان کے راستے فوجی سامان کی منتقلی جلد بحال ہو جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ روکی جانے والی ترسیل میں زیادہ تر وہ فوجی سازو سامان شامل تھا جو فوج کے بتدریج انخلا کے بعد امریکہ واپس بھیجا جا رہا تھا۔ افغانستان میں بھیجے جانے والی رسد کا ایک بڑا حصہ بہت پہلے ہی پاکستان کے حالات کے پیش نظر دیگر ممالک میں موجود متبادل راستوں پر منتقل کر دیا گیا تھا۔ مارک رائٹ نے کہا کہ جیسا کہ ہم جانتے ہیں کہ مظاہروں کے باعث افغانستان اور پاکستان کی مرکزی گزر گاہیں متاثر ہوئی ہیں۔ ہمارے آلات لے جانے والے ڈرائیوروں کے تحفظ کی خاطر ہم نے رضاکارانہ طور پر طورخم سے کراچی کے راستے واپس لے جائے جانے والے سامان کی ترسیل روک دی ہے۔ واضع رہے کہ افغانستان سے امریکی افواج کے انخلاءکے سلسلے میں امریکہ کا فوجی سازوسامان پاکستان کے راستے واپس لے جایا جا رہا ہے۔ خیبرپختونخوا ہ میں دھرنوں کے باعث نیٹو کی گاڑیوں کی آمدورفت متاثر ہو رہی ہے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...