فوکر طیارے حادثے کا مقدمہ 9 سال بعد درج کرنے کا حکم

فوکر طیارے حادثے کا مقدمہ 9 سال بعد درج کرنے کا حکم
فوکر طیارے حادثے کا مقدمہ 9 سال بعد درج کرنے کا حکم

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

ملتان (آئی این پی) سیشن جج ملتان نے 2006ءمیں فوکر طیارے حادثے کا مقدمہ 9 سال بعد درج کرنے کا حکم دے دیا‘ مقدمے میں پی آئی اے اور سول ایوی ایشن کے افسران کے نام بھی شامل کرنے کا حکم‘ فوکر طیارہ حادثہ میں 40 سے زائد مسافر جاں بحق ہو گئے تھے۔ تفصیلات کے مطابق ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ملتان نے مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا۔ مقدمے میں پی آئی اے اور سول ایوی ایشن کے افسران کے نام بھی شامل کرنے کا حکم۔ جولائی 2006 میں فوکر طیارہ حادثہ میں 40 سے زائد مسافر جاں بحق ہو گئے تھے۔ جاں بحق ہونے والوں میں مشہور سیاست دان جاوید ہاشمی کی بھانجی اور ان کے شوہر بھی شامل تھے۔

مزید : ملتان