کس عمر میں ہمارے جسم کی توانائی عروج پر ہوتی ہے؟ سائنسدانوں کا ایسا جواب کہ جان کر آپ کو بھی حیرانگی ہوگی

کس عمر میں ہمارے جسم کی توانائی عروج پر ہوتی ہے؟ سائنسدانوں کا ایسا جواب کہ ...
کس عمر میں ہمارے جسم کی توانائی عروج پر ہوتی ہے؟ سائنسدانوں کا ایسا جواب کہ جان کر آپ کو بھی حیرانگی ہوگی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن(نیوزڈیسک)اکثر یہ سمجھا جاتا ہے کہ انتہائی جوانی کے دنوں میں انسانی جسم میں سب سے زیادہ توانائی ہوتی ہے لیکن ایک جدید تحقیق نے اس خیال کر رد کرتے ہوئے ایک حیران کن جواب دیا ہے۔

ایک صحت کی اشیاءبنانے والی کمپنی Healthspanنے اس بات پر تحقیق کی اور اس کا کہنا ہے کہ ابتدائی عمریعنی 20سال یا اسے زائد عرصے میں انسانی جسم میں توانائی تو ضرور موجود ہوتی ہے لیکن غلط معمولات زندگی اور غیر صحت مند کھانے کی وجہ سے جسم کمزور ہونے لگتا ہے اورتوانائی میں کمی ہوتی ہے۔لیکن جیسے عمر بڑھتی ہے انسان اپنی صحت کا خیال کرتا ہے اور اپنی فیملی کی خاطر بہتر خوراک لیتا ہے جس کی وجہ سے اس کے جسم کوغذائیت ملتی ہے اور اس کے جسم میں نئی توانائی آجاتی ہے۔کئی لوگ یہ کہتے ہیں کہ جس طرح ان میں ذمہ داری کا احساس بڑھتا ہے ویسے ان میں کاموں کو کرنے کے لئے زیادہ توانائی آتی ہے۔سائیکوتھراپسٹ سیلی براﺅن کا کہنا ہے کہ ہمارا لائف سٹائل لازمی طور پر کھانے کی عادات سے متاثر ہوتا ہے لیکن اس سے کہیں زیادہ ہماری دماغی حالت کا جسمانی توانائی سے گہرا تعلق ہے۔اس کاکہنا تھا کہ انسان کی خوش رہنے کی عادت اور ذمے داریوں کو احسن طریقے سے نبھانے سے جسم میں توانائی پیدا ہوتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ 30سال کی عمر کے قریب افراد کو زیادہ ذمہ داریوں سے نبرد آزما ہونا ہوتا ہے لہذا وہ محنت سے کام کرتے ہوئے اور مثبت سوچ رکھتے ہوئے آگے بڑھتے ہیں جس سے ان میں توانائی آتی ہے تاہم جب انسان 50سال کی عمر سے آگے نکلتا ہے تو توانائی کا لیول کم ہونے لگتا ہے ۔

مزید : تعلیم و صحت