معاشیات کا پیشہ چھوڑ کر ائیرہوسٹس بننے والی لڑکی کیلئے سب سے بڑے اعزاز کا اعلان، حیران کن فیصلے کی انتہائی دلچسپ وجہ بھی بتادی

معاشیات کا پیشہ چھوڑ کر ائیرہوسٹس بننے والی لڑکی کیلئے سب سے بڑے اعزاز کا ...
معاشیات کا پیشہ چھوڑ کر ائیرہوسٹس بننے والی لڑکی کیلئے سب سے بڑے اعزاز کا اعلان، حیران کن فیصلے کی انتہائی دلچسپ وجہ بھی بتادی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

ماسکو(مانیٹرنگ ڈیسک) اپنے کام میں کامیابی کا ایک انتہائی آسان فارمولا یہ ہے کہ آدمی کو وہی کام بطور پیشہ اپنانا چاہیے جس کا اسے شوق ہو۔ اس کی ایک مثال روس میں دیکھنے کو ملی جہاں ایک لڑکی نے معاشیات کا پرسکون اور زیادہ منافع بخش پیشہ چھوڑ کر ایئرہوسٹس بننے کا فیصلہ کیا اور آج اس نے روس کی سب سے بہترین ایئرہوسٹس کا اعزاز اپنے نام کر لیا ہے۔ 23سالہ انیسٹاسیا بابوشکینا نے یونیورسٹی سے معاشیات کے مضمون میں ڈگری لی، بطور ماہرمعاشیات ٹریننگ حاصل کی، مگر پھر ایئرہوسٹس بننے کو ترجیح دی۔

انیسٹاسیا جب یونیورسٹی میں تیسرے سال میں تھی تو اس نے کوئی ایسی نوکری تلاش کرنے کی کوشش کی جو اس کے لیے دلچسپ ہو مگر وہ کامیاب نہ ہو سکی۔ اس کا ایک ہی شوق تھا کہ کسی طرح وہ دنیا بھر میں سفر کرے اور نت نئے لوگوں سے ملے۔ بالآخر اس نے اپنے اس شوق کی تکمیل کے لیے ایئرہوسٹس بننے کا فیصلہ کیا اور ایک فضائی کمپنی جوائن کر لی۔ گزشتہ دنوں روس میں سال کی بہترین ایئرہوسٹس کا مقابلہ ہوا جس میں 26ایئرہوسٹسز نے شرکت کی۔ اس میں ایئرہوسٹسز کی خوبصورتی کے ساتھ ساتھ دوران کام ان کے روئیے کا بھی مشاہدہ کیا گیا۔ ججوں نے ان 26ایئرہوسٹسز میں سے انیسٹاسیا کو سال کی بہترین ایئرہوسٹس منتخب کر لیا۔

مزید جانئے: ایمریٹس کا نیا کارنامہ، ایک ایسی سہولت متعارف کروادی جو دنیا میں کسی اور ائیرلائن کے جہازوں میں نہیں

انیسٹا سیا کا کہنا تھا کہ ایک ایئرہوسٹس پر بھاری ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں۔ کام کے دوران ہمیں زیادہ پرسکون رہنا پڑتا ہے اور پیشہ وارانہ روئیے کا مظاہرہ کرنا پڑتا ہے۔اس نے بتایا کہ میرے لیے اس پیشے میں جو سب سے بڑی مشکل ہے وہ اپنے لیے ویزہ حاصل کرنا ہے، میں چونکہ ایک چھوٹی فضائی کمپنی میں ہوں اس لیے کمپنی میرے لیے ویزے کا اہتمام نہیں کرتی بلکہ مجھے بھی دوسروں کی طرح قطار میں لگ کر ویزہ لینا پڑتا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس