ڈاکٹر احسن اختر

ڈاکٹر احسن اختر

دین پور کے گورستان کے اندر ایک قبر میں ڈاکٹر احسن اختر آسودۂ خاک ہیں ۔ آپ رحیم یار خاں کے معروف ڈاکٹر تھے۔ نشتر میڈیکل کالج ملتان کے پڑھے ہوئے تھے ۔ آپ نے 1955ء میں ملتان نشتر کالج سے M.B.B.Sکا امتحان پاس کیا ۔ تصوف وسلوک کے ساتھ لگاؤ اور تعلق انہیں ورثہ میں ملا تھا۔ ہم نے ان کے احوال جاننے کے لئے ان کے بڑے بیٹے ڈاکٹر منصور اختر سے رابطہ کیا۔ آپ کا شمار بھی رحیم یار خاں کے انتہائی نیک نام ڈاکٹروں میں ہوتا ہے۔

ہم ان سے پہلی مرتبہ ملے تھے ۔ پہلی نظر ان کو دیکھا بہت بڑے عالم اور شب زندہ دار پابند صوم وصلوٰۃ عالم باعمل کا گمان گزرا ۔ ان کے اجلے کپڑے ان کے باطن کے عکاس تھے۔ ہم نے ان کے والد ڈاکٹر احسن اختر کو تو دیکھا نہیں تھا البتہ ان کے بیٹے ڈاکٹر منصور اختر کی شکل میں ان کا خیالی چہرہ ذہن نشین ہو گیا۔ڈاکٹر محمد احسن اختر نے سب سے پہلے علی گڑھ یونیورسٹی بھارت سے D.V.Mکا امتحان پاس کیا۔ ملتان میں نشتر میڈیکل کالج کا جب اجراہوا تو پہلے برس میں داخل ہونے والے طلبہ میں سے تھے۔1955-56ء میں نشتر میڈیکل کالج ملتان سے فارغ ہوئے ۔آپ کے والد صاحب زراعت پیشہ تھے۔ ہندوستان کے شہر ضلع ہوشیار پور میں رہتے تھے ۔ تشکیل پاکستان کے بعد ہجرت کر کے اہل و عیال کے ہمراہ پاکستان چلے آئے ۔ گوجرہ کے قریب دارا پور نامی گاؤں میں زمین خریدی اور آبائی پیشہ زراعت اختیار کیا ۔

ڈاکٹر محمد احسن اختر کے چار بیٹے ہیں ۔ ڈاکٹر احسن اختر کو تصوف کی چاشنی ورثہ میں ملی تھی ۔ تعلیم کی غرض سے ملتان آئے تو بیعت کا تعلق مولانا خیر محمد جالندھری سے قائم کیا ۔اکثر ان کی خدمت میں حاضری دیتے تھے ۔ضلع ہوشیار پور میں چھوڑی زمین کے بدلے میں کچھ زرعی رقبہ رحیم یار خاں میں ملا تھا اس لئے رحیم یار خاں میں مستقل سکونت اختیا رکر لی ۔ اور پھر رحیم یار خاں کو مستقل قیام کی جگہ قرار دے دیا اور دین پور کی مٹی کو دفن کے لئے قبول کیا یا دین پور کی مٹی نے ان کو ہمیشہ کے لئے اپنا بنا لیا ۔ کیونکہ ان کے بڑے مرشد مولانا غلام محمد بھی اسی جگہ مدفون تھے۔ آپ نے رحیم یار خاں ہی میں پرائیویٹ پریکٹس شروع کی ۔ اللہ نے مہربانی فرمائی پریکٹس میں خوب برکت ہوئی ۔ رحیم یار خاں میں مولانا عبدا لہادی ؒ پسر خلیفہ اوّل مولانا غلام محمد سے بیعت کا تعلق قائم کیا ۔ اکثر جمعہ کی نماز ادا کرنے کی غرض سے خان پور جاتے ۔ اپنے بیٹوں کو بھی ساتھ لے جاتے ۔مولانا عبد الہادی ؒ کے معالج ڈاکٹر احسن اختر ہی تھے۔ آپ کا انتقال 1991ء میں ہوا ۔ آپ کے بیٹوں میں بڑے بیٹے منصور اختر ہیں ۔کنگ ایڈورڈ میڈیکل کالج لاہور کے پڑھے ہوئے ہیں ۔ وہ بھی پیشہ کے اعتبار سے ڈاکٹر ہیں ۔ رحیم یار خاں میں ان کا بڑانام ہے۔ مولانا عبد الہادی ؒ ہی سے بیعت کا تعلق قائم ہوا ۔

مزید : کالم