دہشتگردی کے خدشات بر قرار ،نجی تعلیمی اداروں میں سیکیورٹی کے ناقص انتظامات

دہشتگردی کے خدشات بر قرار ،نجی تعلیمی اداروں میں سیکیورٹی کے ناقص انتظامات

لاہور(محمد نواز سنگرا)صوبائی دارالحکومت میں تعلیمی اداروں کی سیکیورٹی انتہائی ناقص ہو گئی ہے۔تعلیمی اداروں کیلئے واک تھر و گیٹس،میٹل ڈیٹیکٹراور سی سی ٹی وی کیمرے پہلے ہی نہیں خریدے گئے تھے جبکہ باڑ اور گارڈوں کی تعداد بھی کم ہو گئی ہے،پرائیویٹ تعلیمی اداروں نے پیسے بچانے کیلئے گارڈوں کی چھٹی کرا دی ہے یا کم کر دی ہے۔تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت نے خیبر پختونخواہ میں آرمی پبلک سکول پر دہشتگردی کے واقعہ کے بعد تعلیمی اداروں کی سیکیورٹی انتہائی سخت کرنے پر توجہ دی تھی جس کیلئے حکومت اور تعلیمی اداروں نے مل کر اقدامات اٹھائے تھے جبکہ چند ماہ گزرنے کے بعد حکومت اور محکمہ تعلیم اور پرائیویٹ اداروں کے سربراہان نے نظریں چرا لی ہیں جس وجہ سے تعلیمی اداروں میں دہشتگرد کارروائیاں روکنے کیلئے اقدامات ناکافی ہو گئے ہیں ۔سرکاری اداروں میں تو کہیں گارڈ نظر آرہے ہیں لیکن پرائیویٹ تعلیمی اداروں نے تنخواہیں بچانے کیلئے گارڈوں کی چھٹی کرا دی ہے جس وجہ سے خدشات بڑھنے لگے ہیں۔ایک طرف تعلیمی اداروں کو دہشتگردی کی دھمکیاں مل رہی ہیں تو دوسری طرف اداروں کی سیکیورٹی ایک سوالیہ نشان ہے۔جیل روڈ پر واقعہ تعلیمی اداروں کے باہر سے باڑیں بھی سگنل فری منصوبے کی نذر ہو گئی ہیں اور جیل روڈ پر واقع کالجز کی سیکیورٹی انتہائی کم ہو گئی ہے ۔اس حوالے سے محکمہ داخلہ بھی فی الحال مطمئن بیٹھا ہے کیونکہ اس کو سب اچھے کی رپورٹیں دی جا رہی ہیں جبکہ موقع پر اقدامات نہ ہونے کے برابر ہیں۔اس حوالے سے سیکرٹری سکول ایجوکیشن عبدلجبار شاہین نے بھی تمام سکولوں کو سیکیورٹی سخت کرنے کے احکامات جا ری کیے ہیں لیکن پرائیویٹ ادارے ٹس سے مس نہیں ہو رہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1