ترک صدر نے داعش کے ساتھ تجارت کے روسی دعویٰ کو ’بہتان‘ کہہ کر مسترد کر دیا

ترک صدر نے داعش کے ساتھ تجارت کے روسی دعویٰ کو ’بہتان‘ کہہ کر مسترد کر دیا

انقرہ (این این آئی)ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ کے ساتھ تجارت کے روسی دعویٰ کو ’بہتان‘ کہہ کر مسترد کر دیا ہے۔روس کی وزارت دفاع نے ترکی کے صدر طیب اردوغان کے خاندان پر شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ کے ساتھ تجارت میں براہ راست ملوث ہونے کا الزام عائد کیا تھا۔ترک صدر اردوغان نے سمگلنگ کا دعویٰ ثابت ہونے پر عہدے سے مستعفی ہونے کا وعدہ کیا تھا۔روس کی جانب سے لگائے جانے والے ان الزامات کے جواب میں طیب اردوغان نے کہا کہ کسی کو بھی ترکی پر دولت اسلامیہ سے تیل خریدنے کا الزام لگا کر بہتان تراشی کا حق نہیں ہے تاہم انہوں نے کہاکہ وہ روس کے ساتھ تعلقات کو مزید خراب ہوتا نہیں دیکھ سکتے۔روسی نائب وزیردفاع انتولی انتونوف نے کہا تھا کہ ترکی شام اور عراق سے ’چوری شدہ‘ تیل کا سب سے بڑا خریدار ہے۔

مزید : عالمی منظر