پلاٹوں کی خریداری میں شہری لاکھوں سے محروم،ضمانتی کواپنا مکان بیچنا پڑگیا

پلاٹوں کی خریداری میں شہری لاکھوں سے محروم،ضمانتی کواپنا مکان بیچنا پڑگیا
پلاٹوں کی خریداری میں شہری لاکھوں سے محروم،ضمانتی کواپنا مکان بیچنا پڑگیا

  

لاہور (اپنے نامہ نگار سے)جوہر ٹاؤن میں پلاٹ دلوانے کے بہانے نو سر باز وں نے شہری سے لاکھوں ہتھیا لئے۔ پولیس بھاری رشوت لیکر ملزموں سے مل گئی ۔ تھانہ گجر پورہ پولیس کا ہائیکورٹ کے حکم کے باوجو د گرفتاری میں ٹال مٹول ،ضمانت دینے والے کو ذاتی مکان بیچ کر رقم ادا کرنی پڑی۔ تفصیلات کے مطابق افضال اسلم اور سید علی حسنین رضوی نے کیو بلاک جوہر ٹاؤن میں 5 مرلے کے 2پلاٹوں کا 50 لاکھ میں سودا گجر پورہ کے محمد شبیر سے کیا۔ جس کا ضامن محمد مشتاق تھا۔ 15 لاکھ روپے اقرا رنامہ کے وقت بیعانہ کے طور پر وصول کئے۔ 50 لاکھ میں سے باقی رقم کی ادائیگی پلاٹس کی ٹرانسفر کے وقت طے پائی۔ مقررہ روز محمد شبیر اور ضامن محمد مشتاق نے رابطہ کیا تو افضال اسلم اور سید علی حسنین رضوی نے ٹال مٹول شروع کر دی۔ کافی دباؤ کے بعد سید علی حسنین رضوی نے ایک تحریری اقرار نامہ میں لکھا کہ مبلغ 15 لاکھ کے 3 چیکس6جنوری 2014کو دوں گا مگر وعدے سے مکر گیابلکہ سنگین نتائج سمیت قتل کی دھمکیاں دینے لگے۔جس پر محمد شبیر اور محمد مشتاق نے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کیا اور عدالتی حکم پر سی سی پی او نے ایس ایچ او تھانہ گجر پورہ کو اندراج مقدمہ کا کہا۔ اس دوران پلاٹ خریدنے والے شبیر نے ضامن محمد مشتاق سے اپنی 15 لاکھ کی رقم کا تقاضہ کیا ۔ تنگ آکر محمد مشتاق نے اپنا مکان اونے پونے داموں فروخت کر کے محمد شبیر کو 15 لاکھ ادا کئے۔ تھانہ گجر پورہ میں انچارج انویسٹی گیشن نے کیس کا تفتیشی اے ایس آئی کرامت کو مقرر کیا مگر وہ ملزمان کی گرفتاری میں تاحال ناکام ہے۔ اس دوران ملزمان کے گھروں پر چھاپے بھی رسمی کارروائی کے طور پر مارے گئے۔ مظلوم محمد مشتاق نے وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف ، آئی جی اور سی سی پی او سے اپیل کی ہے کہ ملزمان کی گرفتاری میں تاخیر سے وہ شدید پریشان ہے۔ اہل خانہ کیساتھ ایک چھوٹے سے کرائے کے گھر میں جسکے 2 کمرے ہیں رہنے پر مجبور ہے۔ مقدمہ کی وجہ سے کاروبار بھی تباہ ہو گیا جبکہ پولیس ملزموں سے مل چکی ہے۔ اس نے کہا کہ مجھے انصاف دلوا کر میر ی رقم واپس کروائی جائے۔

مزید : علاقائی