راولپنڈی کے بلدیاتی الیکشن میں تحریک انصاف کے حوصلے بلند مسلم لیگ (ن )کے کلین سویپ کے دعوے

راولپنڈی کے بلدیاتی الیکشن میں تحریک انصاف کے حوصلے بلند مسلم لیگ (ن )کے کلین ...

پنجاب میں تیسرے مرحلے میں5دسمبر کو ہونیوالے بلدیاتی انتخابات کیلئے ضلع راولپنڈی میں 22لاکھ 81 ہزار483ووٹرز حق رائے دہی استعمال کریں گے، 4 ہزار 465پولنگ بوتھ بنائے گئے ہیں اور 1 ہزار7 سو 71 پرائیذائیڈنگ افسران کا تقرر کیا گیا ہے، جماعتی بنیادوں پر ہو نے والے بلدیاتی انتخابات میں پاکستان مسلم لیگ(ن)،تحریک انصاف، عوامی مسلم لیگ، پیپلز پارٹی، جماعت اسلامی کے امیدوار حصہ لے رہے ہیں جبکہ پاکستان مسلم لیگ(ق) کے امیدوار ضلع بھر میں کہیں نظر نہیں آرہے،

ضلع راولپنڈی میں میٹرو پولیٹن کارپوریشن میونسپل کارپوریشن مری،میونسپل کمیٹی گوجر خان، میونسپل کمیٹی ٹیکسلاء،میونسپل کمیٹی کلرسیداں،میونسپل کمیٹی کوٹلی ستیاں،میونسپل کمیٹی کہوٹہ کے علاوہ 106یونین کونسلز اور92وارڈ کمیٹیاں ہیں ،راولپنڈی بھر سے 3622اُمیدوار انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں،اِن میں چئیرمین کی نشست کیلئے 2خواتین،1خاتون وائس چیئرمین اور 7خواتین جنرل کونسلر کی نشست پر جبکہ 1 غیر مسلم وائس چیئرمین کی نشست پر اور 9غیر مسلم جنرل کونسلر کی نشست پر براہ راست الیکشن لڑ رہے ہیں، ضلع کونسل راولپنڈی کیلئے چیئرمین اور وائس چیئرمین کی نشست کیلئے 182اُمیدوار، جنرل کونسلر کی نشست کیلئے 1926اُمیدوار،میونسپل کارپوریشن راولپنڈی کیلئے چئیرمین کی نشست پر 190اُمیدوار، جنرل کونسلر کیلئے 958 اُمیدوار،میونسپل کارپوریشن مری کیلئے چیئرمین اور وائس چیئرمین کی نشست پر 11اُمیدوار، جنرل کونسلر کیلئے81،میونسپل کمیٹی کلر سیداں کیلئے جنرل کونسلر کیلئے58اُمیدوار، گوجر خان میونسپل کمیٹی کیلئے 77اُمیدوار، ٹیکسلا میونسپل کمیٹی کیلئے 67، میونسپل کمیٹی کوٹلی ستیاں کیلئے25، کہوٹہ میونسپل کمیٹی کیلئے 47اُمیدوار انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں جن کا تعلق مختلف سیاسی جماعتوں جن میں پاکستان مسلم لیگ (ن)، پاکستان تحریک انصاف، پاکستان پیپلز پارٹی، جماعت اسلامی،پاکستان عوامی مسلم لیگ اورآزاد اُمیدوار شامل ہیں ،بلدیاتی انتخابات میں پاکستان مسلم لیگ(ن) ، پاکستان پیپلز پارٹی اور پاکستان تحریک انصاف کے سینکڑوں کارکن اور سرکردہ راہنماؤں عزیز آزاد حیثیت سے الیکشن لڑ رہے ہیں جن میں،پاکستان مسلم لیگ (ق) کے مرکزی راہنما راجہ بشارت،راجہ ناصر، راجہ حامد نواز، کے قریبی عزیز راجہ معین سلطان اپنے جماعت کے انتخابی نشان سائیکل کو چھوڑ کر یونین کونسل دھمیال 86سے آزاد حیثیت سے الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں،پاکستان پیپلز پارٹی سٹی کے صدر عامر فدا پراچہ کے بڑے بھائی انجم فاروق پراچہ پیپلز پارٹی کے بجائے یو سی 39میونسپل کارپوریشن راولپنڈی سے آزاد حیثیت سے میدان میں ہیں، جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی سٹی کے راہنما ناصر میر یو سی 1سے پیپلزپارٹی کے بجائے آزاد حیثیت میں بالٹی کے انتخابی نشان پر الیکشن لڑ رہے ہیں، ممبر کینٹ بورڈ راولپنڈی اور پاکستان مسلم لیگ(ن) کے راہنما حاجی ظفر اقبال کے بھائی راجہ فیصل اقبال ایڈووکیٹ یو سی 88لکھن سے آزاد حیثیت میں بالٹی کے نشان پر الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں،اس طرح اہم سیاسی راہنما اور اپنی پارٹی اور پارٹی پالیسی کو نظر انداز کرتے ہوئے آزاد حیثیت میں الیکشن لڑ رہے ہیں جس کی وجہ سے پارٹی کے ووٹ بینک میں نمایاں طور پر کمی ہو گی اور جس کا فائدہ مخالف جماعتوں کو ہو گا ،جبکہ اِن راہنماؤں نے اپنے پارٹی کے اقتدار کے دور میں بھر پور مالی و سیاسی فائدے بھی حاصل کئے ہیں، لیکن جب پاکستان مسلم لیگ(ن)،پاکستان مسلم لیگ(ق)،پاکستان پیپلز پارٹی کا نمایاں طور پر ووٹ بینک کم یا اُنکی پالیسیوں کی وجہ سے عوام نے بے رخی ظاہر کی تو اِن راہنماؤں نے پارٹی کی بجائے آزاد حیثیت سے الیکشن میں خود اور اپنے قریبی رشتہ داروں کو آزاد حیثیت سے بلدیاتی انتخابات میں اتارا تاکہ ووٹرز کو یہ باور کرایا جا سکے کہ ہمارا اِن سیاسی جماعتوں سے کوئی تعلق نہیں ہے اور ہم عوام کی خدمت کیلئے پارٹی کے ٹکٹ کی بجائے آزاد حیثیت الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں، اسی طرح پاکستان مسلم لیگ(ن) تحصیل راولپنڈی راجہ عبدالباسط مسکین نے ٹکٹ نہ ملنے کی وجہ سے یونین کونسل 77گنگال سے پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار پرویز اختر مغل کی حمایت کا اعلان کیا ہے اس اقدام سے یہ ثابت ہوتا ہے اِن کی نظر میں پارٹی پالیسی یا پارٹی کے امیدوار کی کوئی حیثیت نہیں ہے جبکہ سابق چیئرمین ضلع کونسل چوہدری محمد افضل او ر سنیٹر چوہدری تنویر کا کوئی قریبی عزیزبلدیاتی انتخابات میں حصہ نہیں لے رہا اُن کی آبائی یونین کونسل رحمت آباد سے لالہ رحمٰن گل مسلم لیگ(ن) کے امیدوار ہیں جبکہ سردار نسیم جو میٹرو پولیٹن کارپوریشن راولپنڈی کے میئر کے بھی متوقع امیدوار ہیں وہ یونین کونسل 36سے الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں اُنکے مد مقابل پاکستان پیپلز پارٹی کے سابق امیدوار قومی اسمبلی حاجی گلزار اعوان ہیں، معروف سیاستدان عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد کے بھتیجے سابق ناظم راول ٹاؤن شیخ راشد شفیق یونین کونسل 40سے چیئرمین کے امیدوار ہیں اور یہ بھی میٹرو پولیٹن کارپوریشن سے میئر کے متوقع امیدوار ہیں،جبکہ سابق تحصیل نائب ناظم سجاد خان یونین کونسل 42سے انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں جبکہ ضلع کونسل راولپنڈی میں سرور خان،چوہدری نثار علی خان اور چوہدری کامران اسلم گروپوں میں کانٹے دار مقابلہ ہے،ذرائع کے مطابق پاکستان تحریک انصاف مسلم لیگ(ن) کو ضلع بھر میں ٹف ٹائم دے گی اسلام آباد میں ہونے والے بلدیاتی انتخابات کے نتائج کے بعد راولپنڈی بھر میں تحریک انصاف کے امیدواروں کا حوصلہ بلند ہو گیا ہے پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار ضلع بھر میں بھاری اکثریت سے کامیاب ہونے کے دعوے کر رہے ہیں جبکہ اِن کے مد مقابل مسلم لیگ(ن) کے امیدوار بھی کلین سویپ کے دعوے کر رہے ہیں

***

مزید : ایڈیشن 2