پاکستان سمیت دنیا بھر میں معذوروں کا عالمی دن منا یا گیا

پاکستان سمیت دنیا بھر میں معذوروں کا عالمی دن منا یا گیا

لاہور(دیبا مرزا سے ) پاکستان سمیت دنیا بھر میں گز شتہ روز معذوروں کا عالمی دن جوش و خروش سے منا یا گیا ،عالمی دن برائے خصو صی ا فراد کو منا نے کا مقصد پوری دنیا میں خصو صی افراد کے حقوق کے با رے مین اگا ہی فراہم کر نا تھا ۔پاکستان میں کل آبادی کا سات فیصد معذور افراد پر مشتمل ہے جس میں پیدا ہونے والے بچوں کی تعداد گزشتہ پانچ سالوں میں زیادہ ہوئی ہے جب کہ پوری دنیا میں اس کا تناسب دس فیصد ہے۔اقوام متحدہ کے اعداد و شمار کے مطابق اس وقت دنیا میں چھ سو پچاس ملین سے زائد افراد اپاہج ہیں گزشتہ روز اس حوالے سے پنجاب بھر میں بھی گورنمنٹ اور پرائیویٹ سیکٹر میں تقریبات کا انعقاد کیا گیا۔تفضیلات کے مطابق 1998ء کی مردم شماری کے مطابق پاکستان بھر میں 2.5 فیصد لوگ کسی نہ کسی قسم کے معذوری کا شکار ہیں لاکھوں کی تعداد میں معذور افراد میں بینائی گونگے ،بہرے ،جسمانی معذوری ، ذہنی معذوری شامل ہے پنجاب گورنمنٹ کی جانب سے خصوصی افراد کے لئے ایک علیحدہ محکمہ کا بھی قیام عمل میں لایا گیا ہے جس میں بینائی سے محروم گونگے بہرے جسمانی معذوری اور ذہنی معذوری کے حامل بچوں کو تعلیم دی جاتی ہے اس وقت 28900 کے قریب معذور بچے اس میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں،پنجاب حکو مت کی جا نب سے اور مقا می این جی اوز کی مدد سے ان افراد کے لئے ہر ممکن سہو لیات فراہم کر نے کا سسلسلہ جا ری ہے تا کہ ان افراد کو کسی بھی قسم کا کملیکس نہ ہو سکے کہ یہ لو گ عام افراد سے کسی بھی طور کم ہیں گورنمنٹ کی جانب سے ان لوگوں کے لئے خصو صی تعلیم کے ساتھ ساتھ مخصو ص بسیں بھی فراہم کی کئی ہیں تا کہ ان کو ٹرانسپورٹ کے مسا ئل کا سا منا نہ کر نا پڑے۔اس حوالے سے گفتگو کر تے ہو ئے مقا می این جی او کی ممبر فرزانہ نے بتا یا کہ ڈبلیو ایچ او کی عالمی دن کے حوالے سے رپورٹ میں کم عمری کی شادی اورکمزور ماؤں کی وجہ سے’’20 ملین نامولود‘‘ معذور پیدا ہونے کا انکشاف ہونا انتہائی خطرناک ہے۔ بچوں کو مفلوج کر ڈالنے والی بیماریوں کا خاتمہ حکومت کی اولین ترجیح ہونے چائیے جس کیلئے صحت کے حوالے سے بجٹ اور پالیسیز کو بہتر کرنا ہوگا۔کو رنمنٹ او ر پرائیوٹ سطح پر ان خصو صی افراد کے لئے قائم کئے گے مخصو ص اداروں اور مفت سہو لیات ہو نے کے باو جود ان لوگوں کی رسا ئی نہ ہو نا نہ انصا فی ہے گورنمنٹ کو چا ہیےء کہ مخصوص دنوں کے علاوہ بھی ان لو گوں کے لئے اگا ہی کیمپ لگا ئے جا ئیں تاکہ ان لو گوں کے لئے مختص کی گئی سہو لیات ان کو مل سکیں

مزید : صفحہ آخر